Sunday , September 23 2018
Home / Top Stories / یو پی ‘ بنگال ‘ دہلی اور اے پی میں گرد و غبار کا طوفان ‘ 41 ہلاکتیں

یو پی ‘ بنگال ‘ دہلی اور اے پی میں گرد و غبار کا طوفان ‘ 41 ہلاکتیں

نئی دہلی۔ 15 مئی (سیاست ڈاٹ کام) گرد و غبار اور باد و باراں نے اترپردیش، مغربی بنگال، آندھرا پردیش اور دارالحکومت دہلی میں شدید تباہی مچادی۔ کم از کم 41 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاع ہے۔ حکام کے مطابق اترپردیش طوفان اور ژالہ باری سے شدید متاثر ہوا، جہاں 18 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاع ہے جبکہ مغربی بنگال میں 12 افراد بشمول 4 بچوں کی ہلاکت، 9 آندھرا پردیش میں 9 افراد اور دہلی میں 2 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاع ہے۔ شمالی ہند بشمول دہلی میں طوفانی ہواؤں کے چلنے سے کئی درخت جڑ سے اُکھڑ گئے اور روڈ، ریل اور ہوائی جہاز خدمات بھی شدید متاثر ہوئیں۔ ہندوستانی محکمہ موسمیات کے مطابق آج بھی ہماچل پردیش، اتراکھنڈ، پنجاب، ہریانہ، چندی گڑھ، مدھیہ پردیش، جھارکھنڈ، آسام، میگھالیہ، مہاراشٹرا، کرناٹک، کیرالا اور ٹاملناڈو کے مقامات طوفان سے متاثر رہے۔ وزیراعظم نریندر مودی نے اپنے ٹوئٹر پر کہا کہ ’ملک کے کچھ حصوں میں طوفانی تباہی سے ہوئیں اموات کا انہیں نہایت افسوس ہے اور مہلوکین کے ورثا سے ان کی پوری ہمدریاں شامل ہیں اور زخمیوں کے عاجلانہ صحتیابی کیلئے دعا کرتے ہیں۔ کانگریس صدر راہول گاندھی نے بھی ہلاک ہونے والوں کے ساتھ بھرپور ہمدردی کا اظہار کیا ہے اور پارٹی ورکرس سے اپیل کی کہ ان متاثرین کی بھرپور مدد کریں۔ شدید طوفان اور گرد و غبار کی آندھی جس کی رفتار 109 کلومیٹر فی گھنٹہ تھی۔ دہلی اور اس کے نواح کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔

جس کے باعث دو افراد ہلاک اور 18 افراد زخمی ہوگئے اور ہوائی جہاز، ریل و میٹرو سرویس معطل کردی گئیں۔ آندھرا پردیش میں 9 افراد اور سریکاکلم میں 7 اور کڑپہ میں 2 افراد بجلی گرنے سے ہلاک ہوگئے۔ جنوبی ہند کی ریاستوں کے کئی علاقوں میں بارش کے ساتھ ژالہ باری بھی دیکھی گئی۔ دہلی میں شدید ہواؤں کے باعث 200 درخت جڑ سے اکھڑ گئے۔ دہلی فائر سرویس آفیسر کے مطابق نجف گڑھ، ٹرانزٹ کیمپ، نہرو پیالیس، اتر نگر میں موہن گارڈن اور پالم میں راج نگر میں دیواروں کے منہدم ہونے کے واقعات ہوئے۔ خراب موسم کے باعث Zpertensian علاقہ میں 140 KWP سولار پلانٹ چھت کی افتتاحی تقریب جس میں چیف منسٹر اروند کجریوال شامل تھے، متاثر ہوگئی۔ گرد کے طوفان کے باعث دہلی ایرپورٹ پر کئی خدمات کو ملتوی کردیا گیا اور حکام کے مطابق کم از کم 40 فلائیٹس کے رخ کو موڑ دیا گیا اور 24 فلائیٹس کی آمد و رفت میں تاخیر ہوئی۔ برقی تاروں کے اوپر درخت گرنے سے وائیلٹ اور بلو لائینس میٹر خدمات بھی متاثر ہوئیں۔ محکمہ موسمیات کے حکام کے مطابق صفدر جنگ آبزرویٹری کی جانب سے 8.3 ملی میٹر، پالم، آیا نگر اور لودھی روڈ، علاقوں میں 2.1، 6.4، 0.8 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ مرکزی موسمی پیش قیاسی سنٹر کے صدر ستی دیوی کے مطابق کل مطلع جزوی ابر آلود اور ہلکی بارش کی پیش قیاسی کی گئی ہے اور دو خرابی کے باعث غیریقینی موسم دیکھا گیا ہے۔ دہلی سے بڑے پیمانے پر بادلوں کے گذرنے کو دیکھا گیا۔ ایک نجی موسمی پیش قیاسی ایجنسی SKYMET کے صدر جی پی شرما کے مطابق موسم کی شدت نہ صرف دہلی بلکہ پانی پت ، جھنجھار، روہتک اور ہریانہ میں چند اور اترپردیش کے کچھ علاقے متاثر رہیں گے۔

TOPPOPULARRECENT