Saturday , November 18 2017
Home / دنیا / یہودی تہوار کے پیش نظر مغربی کنارہ کی سرحد بند کردی گئی

یہودی تہوار کے پیش نظر مغربی کنارہ کی سرحد بند کردی گئی

یروشلم۔ 23 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) اسرائیل نے مقبوضہ مغربی کنارہ کو یہودیوں کے تہوار کے پیش نظر بند کردیا ہے جس کا آج سے آغاز ہورہا ہے جبکہ ہفتہ تک سکیورٹی سخت کردی گئی ہے۔ عام طور پر اسرائیل ایسے فیصلے نہیں کرتا لیکن حالیہ دنوں میں فلسطینی شہریوں کے ذریعہ چاقوزنی، فائرنگ اور کار کے ذریعہ حملہ کرنے کے واقعات میں اضافہ کو دیکھتے ہوئے فیصلہ ناگزیر ہوگیا تھا۔ گزشتہ سال اکتوبر سے فلسطینی شہریوں کے ذریعہ اسرائیلی پولیس اہلکاروں کو نشانہ بنانے کا سلسلہ شروع ہوا تھا۔ اس فیصلہ کے بعد ہزاروں فلسطینی ورکرس مقبوضہ مغربی کنارہ میں داخل نہیں ہوسکیں گے۔ چہارشنبہ کی شب سے یہودیوں کے تہوار پوریم کا آغاز ہورہا ہے۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج کی ایک خاتون ترجمان نے کہا کہ یہ فیصلہ حکومت کے ذریعہ جاری کئے گئے حکم کے بعد کیا گیا ہے جس کے لئے موجودہ صورتحال کا بھی بغور جائزہ لیا گیا تھا۔ ترجمان نے بتایا کہ البتہ انسانی اور طبی بنیادوں پر کچھ معاملات ایسے ہوسکتے ہیں جہاں فلسطینی شہریوں کو مغربی کنارہ سے اسرائیل میں داخل ہونے کی اجازت دی جائے گی۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری ہے کہ اب تک اسرائیل نے پاس اوور اور یوم کپور جیسے یہودی تہواروں کے موقع پر بھی مغربی کنارہ کو بند کیا تھا تاہم پوریم تہوار کے موقع پر سرحد کو ہر سال بند نہیں کیا جاتا تھا۔

TOPPOPULARRECENT