Tuesday , February 20 2018
Home / شہر کی خبریں / ۔17غریب بچوں کو اسلام قبول کرانے کا الزام

۔17غریب بچوں کو اسلام قبول کرانے کا الزام

پولیس نے مولاعلیؓ کے مدرسہ سے بچوں کو رہا کرالیا ، 9 گرفتار
حیدرآباد۔ 19 نومبر (سیاست نیوز) پولیس نے 9 افراد کو گرفتار کرلیا ہے جن پر الزام ہے کہ انہوں نے تلنگانہ میں غریب خاندانوں سے تعلق رکھنے والے بچوں کو مفت تعلیم ، غذا اور سہارا فراہم کرنے کے بہانے داخل اسلام کرایا تھا۔ پولیس نے 4 تا 15 سال کی عمر کے 17 بچوں کو بچا لیا ہے جن میں 7 لڑکیاں بھی شامل ہیں۔ چائیلڈ ویلفیر کمیٹی کی شکایت پر مولاعلیؓ میں واقع ایک غیرمسلمہ اسکول کے احاطہ سے ان بچوں کو آزاد کرالیا گیا۔ اس کیس میں 10 ملزمین کے منجملہ پولیس نے اصل ملزم محمد صدیقی عرف ستیہ نارائنا اور دیگر 8 کو گرفتار کرلیا ہے۔ صدیقی اور دیگر 8 افراد مبینہ طور پر تلنگانہ کے علاقوں بھدراچلم، محبوب نگر، کھمم اور ورنگل کے دور دراز کے مواضعات میں غریب والدین کو لالچ دے کر مفت تعلیم، غذا اور رہنے کی سہولت فراہم کرنے کا وعدہ کرتے ہوئے اپنے اسکول میں شریک کرلیا تھا۔ اسسٹنٹ کمشنر پولیس ملکاجگری ڈیویژن جی سندیپ نے کہا کہ ملزمین نے ان بچوں کو قبول اسلام کرواکر انہیں اُردو اور عربی تعلیم دینی شروع کی تھی۔ ان بچوں کا تعلق زیادہ تر ایس سی، ایس ٹی طبقات سے ہے۔

TOPPOPULARRECENT