Friday , May 25 2018
Home / Top Stories / ۔2جی پر عدالت کا فیصلہ کانگریس کیلئے ’ایمانداری کا تمغہ‘نہیں :جیٹلی

۔2جی پر عدالت کا فیصلہ کانگریس کیلئے ’ایمانداری کا تمغہ‘نہیں :جیٹلی

نئی دہلی،21دسمبر (سیاست ڈاٹ کام )سی بی آئی کی خصوصی عدالت کے ذریعہ 2جی  اسکام معاملے سبھی ملزمین کو آج بری کئے جانے پر حکومت نے کہا ہے کہ اس سے کانگریس کو ‘ایمانداری کا تمغہ’نہیں مل جاتا۔وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے یہاں پارلیمنٹ کے احاطے میں اس فیصلے پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے نامہ نگاروں سے کہاکہ عدالت فیصلہ آنے کے بعد سے ہی کانگریس لیڈر ایسا ظاہر کررہے ہیں جیسے انہیں ایمانداری کا تمغہ مل گیا ہو اور عدالت نے ان کی پالیسی کو ایماندار پالیسی کا سرٹیفکیٹ دے دیا ہو۔انہوں نے مالی سال 08-2007میں کئے گئے 2جی اسپیکٹرم الاٹمنٹ سے لے کر 2016تک کے اسپیکٹرم الاٹمنٹ کے اعدادو شمار پیش کرتے ہوئے یہ بتانے کی کوشش کی کہ اس سے سرکاری خزانے کو کتنا نقصان ہوا ہے ۔یہ پوچھے جانے پر کہ کیا وہ مانتے ہیں کہ کوئی گھوٹالہ ہوا ہے، جیٹلی نے کہا کہ انہوں نے سارے اعدادو شمار اور حقائق میڈیا کے سامنے رکھ دئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جانچ اور استغاثہ ایجنسی عدالت کے فیصلے کا اچھی طرح مطالعہ کرنے کے بعدآگے کی حکمت عملی طے کرے گی۔انہوں نے سوال کیا کہ عدالت نے سب کو بری کردیا ہے تو اس پورے گھوٹالے کے لئے کون ذمہ دار ہے؟۔ جیٹلی نے کہاکہ سپریم کورٹ کے حکم پر مجرمامہ معاملہ درج کیا گیا تھا۔جانچ ایجنسیاں اور استغاثہ ایجنسیاں عدالت کے حکم کا پوری طرح مطالعہ کرنے کے بعد یہ طے کریں گی کہ ان کا اگلہ رخ کیا ہوگا۔ جیٹلی نے دہرایا کہ اس میں ایسا کچھ نہیں ہے کہ جسے کانگریس ایماندرای کا سرٹیفکیٹ مان سکے۔ جیٹلی جب نامہ نگاروں سے بات کررہے تھے تو ان کے ساتھ وزیر مواصلات منوج سنہا بھی موجود تھے ۔ جیٹلی نے اعدادو شمار دیتے ہوئے کہا کہ سب سے پہلے تو کانگریس کی قیادت والی سابقہ یو پی اے حکومت نے 2007-08میں 1,734کروڑ روپے کی درست قیمت پر اسپیکٹرم کا الاٹمنٹ کیا۔یہ وہ قیمت ہے جو سال 2001 میں طے کی گئی تھی۔اس طرح پرانی قیمت پر الاٹمنٹ کرنے سے سرکاری خزانے کو نقصان ہوا۔انہوں نے کہا کہ پہلے الاٹمنٹ ”پہلے آؤ پلے پاؤ’کی بنیاد پر کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔

 

ایف آر ڈی آئی قانون، ڈپازیٹرس کی رقم کا تحفظ : ارون جیٹلی
نئی دہلی ۔ 21 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیرفینانس ارون جیٹلی نے آج لوک سبھا کو تیقن دیا کہ تمام ڈپازیٹرس کی رقم جو سرکاری بینکوں میں جمع کروائی گئی ہے، اس کا تحفظ کیا جائے گا اور نفسیاتی خوف پیدا کرنے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔ حکومت ہر ڈپازیٹر کی رقم کے تحفظ کی پابند ہے۔ سرکاری بینکوں میں ان کی رقم بالکل محفوظ رہے گی اس لئے نفسیاتی خوف کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ وہ مطالبات زر پر مباحث میں بیان دے رہے تھے۔ جب ایف آر ڈی آئی بل مشترکہ کمیٹی کے سامنے پیش کیا جائے گا تو اس پر تبادلہ خیال بھی ہوگا۔ 2011ء، جی۔ 20 پابندی برقرار ہے جبکہ یو پی اے برسراقتدار تھی۔ 2008ء کے عالمی بحران کا اسی وقت آغاز ہوا تھا جبکہ لیہ مین برادرس دیوالیہ ہوگئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ معاشی دیوالیہ پن اور ڈپازٹ انشورنس بل 2017ء پارلیمنٹ کے اجلاس میں ماہ اگست میں پیش کیا جائے گا۔ اس نے تحفظ کا فقرہ بھی شامل ہے۔ سیونگ اکاؤنٹ کی صورت میں جمع شدہ رقم کا تحفظ کیا جائے گا۔ فی الحال مشترکہ پارلیمانی کمیٹی اس مسودہ قانون کا جائزہ لے رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT