Saturday , December 16 2017
Home / سیاسیات / ۔2016 میں کجریوال، کنہیا اور مالیا مقبول

۔2016 میں کجریوال، کنہیا اور مالیا مقبول

جے این یو تنازعہ، شراب کے بیوپاری کی برطانیہ فراری کی خبریں سرفہرست
نئی دہلی۔23 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) سال 2016ء میں عدالتی مقدمات دیکھے گئے ہیں۔ بڑی شخصیتوں کے مقدمات سے عدالتیں بھری پڑی تھیں۔ اس میں چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال ، شراب کے بیوپاری وجئے مالیا کے علاوہ جے این یو کے اسٹوڈنٹ لیڈر کنہیا کمار پر حملہ کی خبریں چھائی رہیں۔ اس کے علاوہ وکلاء نے ان شخصیتوں کو خبروں کی زینت بنانے میں اہم رول ادا کیا۔ عدلیہ کا وقار اس وقت پامال ہوا جب ایک خاتون جج کو سی بی آئی نے مبینہ طور پر اپنے وکیل شوہر سے ایک معاہدے کے لئے رشوت لیتے ہوئے گرفتار کیا گیا تھا۔ کنہیا کمار جن پر جے این یو کیمپس میں ایک متنازعہ تقریب منعقد کرنے کی پاداش میں غداری کا الزام عائد کیا گیا تھا اور قوم دشمن نعروں کو بلند کرنے کی سرزنش کی گئی تھی۔ پٹیالہ ہائوز عدالت کامپلکس میں وکلاء نے انہیں زدوکوب بھی کیا تھا۔ یہ واقعہ دہلی پولیس پر سیاہ داغ ثابت ہوا۔ کیوں کہ وہ عدالت میں اسٹونڈنٹ لیڈر کو کوئی گزن پہنچائے بغیر پیش کرنے میں ناکام رہی ۔ سی بی آئی نے اعلی بیوروکریٹ بی کے بنسل جنہوں نے اپنے فرزند کے ساتھ خودکشی کرلی تھی، الزام عائد کیا گیا کہ سی بی آئی نے انہیں اور ان کے ارکان خاندان کو ہراساں کیا تھا۔ وجئے مالیا برطانیہ فرار ہوگئے تھے اور عدلیہ نے ان کے خلاف دو غیر ضمانتی وارنٹ جاری کئے تھے۔ جج نے ان کے خلاف وارنٹ جاری کرتے ہوئے احساس ظاہر کیا تھا کہ آخر مالیا کو قانون کا کوئی پاس و لحاظ ہے یا نہیں؟ لگتا ہے وہ ہندوستان واپس ہونے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتے۔ اروند کجریوال بھی سرخیوں میں چھائے رہے۔ لیفٹننٹ گورنر نجیب جنگ کے ساتھ ان کا تنازعہ شدت اختیار کرتا گیا۔ اروند کجریوال حکومت کے فیصلوں کے خلاف ان کے اقدامات متنازعہ بن گئے تھے۔

 

نوٹوں کی تنسیخ سے 8 لاکھ کروڑ کا خسارہ : کجریوال
جئے پور ۔ 23 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی پارٹی کے کنوینر اروندکجریوال نے آج وزیراعظم نریندر مودی پر الزام عائد کیا کہ اعلیٰ مالیتی کرنسی نوٹوں کی تنسیْخ کے فیصلہ سے ملک کو 8 لاکھ کروڑ روپئے کا خسارہ ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT