Tuesday , September 18 2018
Home / ہندوستان /  ۔2019 ء : لوک سبھا کیساتھ 19 ریاستوں میں

 ۔2019 ء : لوک سبھا کیساتھ 19 ریاستوں میں

بیک وقت انتخابات کو لاکمیشن کی تائید
نئی دہلی ۔ 11اپریل ۔( سیاست ڈاٹ کام ) وزیراعظم نریندر مودی کا لوک سبھا اور اسمبلی انتخابات کے بیک وقت انعقاد کے نظریہ کو لاء کمیشن کی تائید بھی حاصل ہوگئی ہے ۔ لاء کمیشن ایک مسودہ تیار کررہا ہے جس میں سفارش کی گئی ہے کہ دو مرحلوں میں 2019 ء سے لوک سبھا اور اسمبلیوں کے بیک وقت انتخابات منعقد کئے جائیں ۔ مسودے قانون کے مطابق 19 ریاستوں اور مرکزی زیرانتظام علاقوں میں لوک سبھا انتخابات کے ساتھ ساتھ مارچ یا اپریل 2019 ء میں انتخابات کروائے جائیں ۔ 12 ریاستوں میں 2024 ء میں لوک سبھا انتخابات کے ساتھ انتخابات کروائے جاسکتے ہیں۔ ذرائع کے بموجب مسودے قانون پر لاء کمیشن کے اجلاس میں جو 17 اپریل کو منعقد کیا جائے گا ، غور کیا جاسکتا ہے ۔ توقع ہے کہ اس اجلاس میں تمام ارکان شرکت کریں گے ۔ مسودے قانون کے مطابق ریاستوں کے دو گروپ بنائے جائیں گے ۔ ایک گروپ میں لوک سبھا کے ساتھ 2019 ء میں انتخابات منعقد کئے جائیں گے جبکہ دوسرے گروپ میں 2024 ء میں ایسا ہی کیا جائے گا ۔ پہلے مرحلے کی ریاستوں میں مغربی بنگال ، ٹاملناڈو ، کیرالا ، آسام اور جموں و کشمیر کو شامل کیا گیا ہے ۔ یہ تمام ریاستیں وہ ہیں جن میں اسمبلی انتخابات 2021 ء میں کروائے جانے چاہیے ۔ دوسرے مرحلوں کی ریاست میں یوپی شامل ہے ۔ یہ ایک سیاسی دھماکو صورتحال والی ریاست ہے ۔ مئی 2024 ء میں دوسرے مرحلے کے عام انتخابات منعقد ہونے کا اندازہ ہے ، اس میں کرناٹک اور میزورم جیسی ریاستیں شامل ہوں گی ۔ لاء کمیشن کے مطابق کرناٹک اور میزورم میں انتخابات 2018 ء میں منعقد شدنی ہیں ۔ ایک ذریعہ نے وضاحت کی کہ بیک وقت انتخابات کے انعقاد کا مطلب یہ ہوگا کہ اسمبلی انتخابات بعض ریاستوں میں جو زمرۂ اول میں شامل ہیں قبل از وقت ہوں گے اور بعض ریاستوں کے انتخابات 2024 ء تک ملتوی کردیئے جائیں گے جبکہ زمرۂ دوم کی دیگر تمام ریاستوں میں انتخابات منعقد ہوں گے ۔ اسمبلی انتخابات زمرۂ دوم کی ریاستوں کے 2024 ء کے عام انتخابات کے ساتھ کروانے کیلئے متعلقہ اسمبلیوں کی میعاد میں توسیع کرنی ہوگی اور اس کا مطلب یہ ہے کہ دستور اور قانون عوامی نمائندگی 1951ء میں ترمیم کرنا پڑے گا ۔ بعض وجوہات کی بناء پر ریاستی اسمبلیوں کی میعاد میں توسیع نہیں کی جاسکتی اور زمرۂ دوم کی ریاستوں میں اسمبلی انتخابات زمرۂ اول کے 2019 ء کے انتخابات کے 30 ماہ بعد منعقد کرنے پڑیں گے ۔ یعنی سپٹمبر ۔ اکٹوبر 2021 ء میں کروانے ہوں گے ۔ لوک سبھا کے انتخابی دور کا ایک بار اختتام ہوجائے اور 2021 ء میں لوک سبھا اور اسمبلیوں کے انتخابات ایک ساتھ منعقد ہوجائیں تو اس کے بعد ہر ڈھائی سال بعد انتخابات منعقد کئے جاسکیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT