Friday , July 20 2018
Home / سیاسیات / ۔2019 ء میں پارلیمنٹ میں توازنِ قوت بدل جائے گا: شیوسینا

۔2019 ء میں پارلیمنٹ میں توازنِ قوت بدل جائے گا: شیوسینا

ممبئی 15 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) شیوسینا نے 2019 ء میں منعقد ہونے والے پارلیمانی انتخابات میں بی جے پی اور کانگریس کی نشستوں میں ممکنہ تبدیلی کی پیش قیاسی کی ہے اور کہاکہ یوپی اور بہار میں منعقدہ ضمنی انتخابات کے نتائج نے اپوزیشن جماعتوں میں اُمید کی کرن جگادی ہے۔ تاہم شیوسینا نے اپنے اداریہ میں لکھا کہ بدقسمتی سے اپوزیشن جماعتوں میں ایسی کوئی جارحانہ قیادت نہیں ہے جو برسر اقتدار جماعت سے مقابلہ کرسکے۔ ’سامنا‘ کے اداریہ میں مزید کہا گیا ہے کہ کانگریس صدر راہول گاندھی کو وزیراعظم نریندر مودی کی ’شبیہ‘ سے مقابلہ کرنا ہوگا۔ واضح رہے کہ 2019 ء کے عام انتخابات سے قبل یوپی اور بہار کے ضمنی انتخابات میں بی جے پی کی شرمناک شکست کا تذکرہ کرتے ہوئے شیوسینا نے طنز کیاکہ بی جے پی نہ صرف بہار بلکہ اپنے مضبوط گڑھ یوپی میں بھی بُری طرح سے ناکام ہوگئی جس سے عوام میں بی جے پی کا بھرم کھل چکا ہے۔ ’سامنا‘ نے مزید لکھا کہ عوام اب تصوراتی، جذباتی اور فریب پر مبنی دنیا سے باہر نکل آئے ہیں۔ اُنھیں اِس بات کا احساس ہوچکا ہے کہ موجودہ حکومت اُن کے ساتھ دھوکہ دہی کررہی ہے۔ مگر بدقسمتی یہ ہے کہ اپوزیشن جماعتوں میں کوئی مستحکم قیادت نہیں ہے جو عوام کے سامنے بی جے پی کی حقیقی تصویر پیش کرنے میں کامیاب ہو۔ اُنھوں نے کہاکہ اِس وقت پارلیمنٹ میں بی جے پی کے پاس 280 نشستیں ہیں جبکہ کانگریس صرف 50 نشستیں رکھتی ہے تاہم اگر تمام اپوزیشن جماعتیں متحدہ طور پر 2019 ء کے عام انتخابات کا سامنا کریں تو پارلیمنٹ میں توازن قوت یقینی طور پر تبدیل ہوجائے گا۔

TOPPOPULARRECENT