Monday , December 18 2017
Home / Top Stories / ۔2022 ء میں ترقی یافتہ ہندوستان کا عہد

۔2022 ء میں ترقی یافتہ ہندوستان کا عہد

ملک تیزی سے بدل رہا ہے ، غریبوں کو ان کا حق بھیک میں نہیں ملے گا ، میری حکومت سب کیلئے ہوگی:مودی

نئی دہلی ۔ /12 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کی اترپردیش اور اترکھنڈ میں شاندار کامیابی کے بعد وزیراعظم نریندر مودی نے 2022 ء تک ایک نئے ہندوستان کی تعمیر کا عہد کیا ۔ ایک ایسا ہندوستان جس پر بابائے قوم کو فخر ہو ۔ انہوں نے بی جے پی ہیڈکوارٹر پر پارٹی قائدین اور حامیوں کی تہنیت قبول کرتے ہوئے کہا کہ انتخابی نتائج بالخصوص اترپردیش کا نتیجہ ان کی نظر میں ایک نئے ہندوستان کا سنگ بنیاد ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک ایسا ہندوستان جہاں 65 فیصد آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہوگی جن کی عمریں 35 سال سے بھی کم ہوں گی ۔ ایک ایسا ہندوستان جہاں خواتین کیلئے ترقی کے مواقع ہوں گے ۔ انہوں نے مودی مودی نعروں کے درمیان کہا کہ ہم ایک ایسا ہندوستان تعمیر کریں گے جہاں غریب عوام کو کوئی چیز بھیک میں نہیں دی جائے گی بلکہ وہ خود اپنے لئے مواقع فراہم کریں گے ۔ انہیں آنے والی تبدیلیاں صاف دکھائی دے رہی ہیں ۔ اس سے پہلے نریندر مودی نے ٹوئٹ کیا کہ ہندوستان تیزی سے ابھررہا ہے ۔ یہاں کے 125 کروڑ ہندوستانیوں کو باصلاحیت اور بااختیار بنایا جارہا ہے اور یہ ہندوستان ترقی یافتہ ہوگا ۔ انتخابی مہم کے دوران کافی تلخ ریمارکس دیکھنے میں آئے اور یہ تخریبی مہم رہی ۔ نریندر مودی کے یو پی میں انتخابی ریالی کے دوران ’’شمشان گھاٹ اور قبرستان‘‘ تبصرے پر یہ سمجھا جارہا تھا کہ وہ رائے دہندوں کو فرقہ وارانہ خطوط پر تقسیم کرنا چاہتے ہیں ۔ تاہم آج انہوں نے اپنی ویب سائیٹ پر لکھا کہ ہندوستان تیزی سے بدل رہا ہے اور ملک کے ہر ہر شہری کا اس میں اہم رول ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا ملک اختراع پسند ، سخت محنت اور تخلیقی صلاحیتوں کے ساتھ ساتھ امن ، اتحاد اور بھائی چارگی کا مظہر ہوگا ۔ یہاں کرپشن ، دہشت گردی ، کالا دھن اور کوئی گندگی نہیں ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی پارٹیوں نے جذباتی مسائل پر یہ مقابلہ کیا اور ترقی کا موضوع انہوں نے نہیں چھیڑا کیونکہ یہ ایک مشکل موضوع تھا ۔ لیکن اس بار جذباتی مسائل کے مقابلہ ترقیاتی موضوع کو مرکزی اہمیت حاصل رہی ۔

انہوں نے کہا کہ غریب عوام نے کثیر تعداد میں محض ترقی کی بنیاد پر ووٹ دیا ہے ۔ انہوں نے حریف جماعتوں پر ذات پات اور مذہب کی سیاست کرنے کا الزام عائد کیا ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی زیرقیادت حکومت ایک جمہوری حکومت ہوگی جس میں سب کو شامل کیا جائے گا اور یہ اکثریت کی بنیاد پر نہیں بلکہ اتفاق رائے کی بنیاد پر کام کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ کسی کے ساتھ امتیازی سلوک کا حکومت کو کوئی حق نہیں پہونچتا ۔ یہ حکومت ان کے لئے ہے جنہوں نے ووٹ دیا اور ان کیلئے بھی ہے جنہوں نے ووٹ نہیں دیا ۔ نئے ہندوستان کی تعمیر میں ہر شخص شامل رہے گا ۔ انتخابی مہم کے دوران جارحانہ موڈ میں رہنے والے نریندر مودی نے اب انکساری کی بات کہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب درخت پر پھل لگتے ہیں تو وہ درخت کتنا ہی بڑا کیوں نہ ہو جھک جاتا ہے ۔ بی جے پی بھی کامیابیوں کے پھل سے لدی ہوئی ہے اور اب ہماری یہ ذمہ داری ہے کہ ہم بھی درخت کی طرح جھک جائیں ۔ انہوں نے جن سنگھ اور بی جے پی قائدین جیسے اٹل بہاری واجپائی ، اڈوانی ، کیشوبھاؤ ٹھاکرے اور کرشنا مورتی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اپنی جوانی اور زندگی اس درخت کو سینچنے میں لگادی ۔ نریندر مودی نے کہا کہ 2022 ء میں جب آزادی کے 75 سال پورے ہورہے ہوں گے اس وقت ہم ایک ایسا ہندوستان بنائیں گے جس پر گاندھی جی ، سردار پٹیل اور ڈاکٹر امبیڈکر کو فخر ہو ۔ انہوں نے کہا کہ  یہ بی جے پی کیلئے سنہرا دور ہے ۔ پارٹی نے اس مقام تک پہونچنے کیلئے کافی جدوجہد کی ۔ قبل ازیں نریندر مودی جلوس کی شکل میں بی جے پی ہیڈکوارٹر پہونچے ۔ ان کا موٹروں کا قافلہ جیسے ہی یہاں پہونچا حامیوں نے انہیں گھیرلیا ۔ وہ پارٹی پارلیمانی بورڈ کے اجلاس میں شرکت کیلئے آئے ہوئے تھے ۔ سکیورٹی عملہ نے انہیں گھیر رکھا تھا اور مودی اپنے حامیوں کے استقبال کا ہاتھ لہرا کر جواب دے رہے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT