Saturday , December 15 2018

۔25 لاکھ روپئے سے زائد رقم ڈپازٹ کرانے والے 1.6 لاکھ افراد کو نوٹس

نوٹ بندی کے بعد آئی ٹی ریٹرنس داخل کرنے والے افراد پر بھی محکمہ انکم ٹیکس کی کڑی نظر

نئی دہلی۔ 28 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) محکمہ انکم ٹیکس نے نوٹ بندی کے بعد بینک اکاؤنٹس میں 25 لاکھ سے زائد رقم ڈپارزٹ کرنے والے انفرادی اکاؤنٹ ہولڈرس اور فرمس کو نوٹس جاری کی ہے۔ محکمہ انکم ٹیکس کے مطابق اس نے 1.16 لاکھ افراد اور فرمس کو یہ نوٹس دی ہے جنہوں نے انکم ٹیکس ریٹرنس داخل کرنے کی آخری تاریخ تک بھی اپنا تختہ جات حساب داخل نہیں کی ہے۔ سی بی ڈی ٹی چیرمین سشیل چتورا نے یہ بات بتائی۔ اس کے علاوہ عوام کی جانب سے بڑے پیمانے پر رقم ڈپازٹ کرانے کا بھی جائزہ لیا جارہا ہے۔ بہت سخت تنقیح کی جارہی ہے، بلکہ انکم ٹیکس نے زائد از 18 لاکھ افراد کو احاطہ کرکے ان کی رقمی لین دین پر نظر رکھی ہے۔ مابعد نوٹ بندی 2.5 لاکھ کی شکل میں فی فرد 500 اور 1000 روپئے کی کرنسی نوٹس جمع کرانے والوں کو بھی تحقیقات کے دائرہ میں لایا جارہا ہے۔ ان کے منجملہ جو انفرادی افراد اور کمپنیاں ہیں جنہوں نے ہنوز اپنا آئی ٹی ریٹرنس داخل نہیں کی ہے، انہیں دو زمروں میں رکھا گیا ہے جو لوگ زائد از 25 لاکھ روپئے اپنے بینک اکاؤنٹس میں جمع کرائے ہیں اور وہ لوگ جو 10 تا 25 لاکھ روپئے بینک اکاؤنٹس میں رکھتے ہیں۔ ایسے 1.16 لاکھ افراد کی نشاندہی کی گئی ہے، جنہوں نے حالیہ نوٹ بندی اپنے اکاونٹس میں زائد از 25 لاکھ روپئے ڈپازٹ کروائے ہیں اور یہ رقم پرانی کرنسی نوٹ کی شکل میں تھی لیکن انہوں نے اب تک اپنے انکم ٹیکس ریٹرنس داخل نہیں کیا ہے لہذا ہم نے ان سے کہا ہے کہ وہ 30 دن کے اندر اپنے ریٹرنس داخل کردیئے ہیں۔ چیرمین سی بی ڈی ٹی شیلا چندرا نے مزید کہا کہ 2.4 لاکھ افراد نے 10 تا 25 لاکھ روپئے کی رقم ڈپازٹ کروائی ہے جنہوں نے اب تک اپنا ریٹرنس داخل نہیں کیا ہے، انہیں بھی دوسرے نوٹس دی جائے گی۔ اگر انہوں اپنے ریٹرنس داخل نہیں کئے تو اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ یہ نوٹس دفعہ 142(1) انکم ٹیکس قانون کے تحت دی جارہی ہے۔ عہدیدار نے مزید کہا کہ آئی ٹی قانون کی خلاف ورزی کی ہے۔ عہدیدار نے مزید کہا کہ آئی ٹی قانون کی خلاف ورزی کرنے والے متعدد افراد کے خلاف مقدمہ چلایا جائے گا۔ اس سال اپریل۔ ستمبر میں انکم ٹیکس قانون کے خلاف ورزی کرنے والوں کی تعداد 609 ہوئی جبکہ گزشتہ سال 288 افراد نے خلاف ورزی کی گئی۔ نوٹ بندی کے بعد انکم ٹیکس قانون کے مغائر کام کرنے والوں کی تعداد میں دوگنا اضافہ ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT