Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / ۔30 جون کی نصف شب سے جی ایس ٹی پر عمل آوری کا آغاز ہوگا

۔30 جون کی نصف شب سے جی ایس ٹی پر عمل آوری کا آغاز ہوگا

پارلیمنٹ کے تاریخی سنٹرل ہال میں یادگار تقریب منعقد ہوگی ۔ صدر جمہوریہ ‘نائب صدر ‘ وزیر اعظم ‘ سابق وزرائے اعظم کی شرکت
نئی دہلی 20 جون ( سیاست ڈآٹ کام ) 15 اگسٹ 1947 کی نصف شب جب ہندوستان آزاد ہوا سا وقت کے گواہ پارلیمنٹ کے تاریخی سنٹرل ہال میں 30 جون ۔ یکم جولائی کی درمیانی شب بھی ایک تقریب منعقد ہوگی جب اس ملک میں جی ایس ٹی رائج ہوگا ۔ جی ایس ٹی پر 30 جون اور یکم ؍ جولائی کی درمیانی نصف شب سے عمل آوری کرنے کا مرکزی حکومت نے اعلان کیا ہے ۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی نے اس گڈس اینڈ سرویس ٹیکس ( جی ایس ٹی ) پر نصف شب سے عمل آوری کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس سلسلہ میں پارلیمنٹ کے سنٹرل ہال میں ایک گھنٹہ طویل تقریب منعقد ہوگا جس میں مختلف سیاسی جماعتوں اور ریاستوں کی جانب سے انقلابی سمجھے جانے والے اس ٹیکس کو یقینی بنانے کیلئے کئے گئے اقدامات کو پیش کیا جائے گا ۔ پارلیمنٹ کے سنٹرل ہال میں اس سے قبل جو تقریب منعقد ہوئی تھی وہ ہندوستان کی آزادی کے پچاس سال کی تکمیل پر منعقد ہوئی تھی ۔ اس موقع پر جو تقریب منعقد ہوگی اس میں شہ نشین پر صدر جمہوریہ پرنب مکرجی کے ساتھ وزیر اعظم نریندر مودی بھی موجود رہیں گے ۔ صدر جمہوریہ پرنب مکرجی نے سابقہ یو پی اے حکومت میں 2011 میں جب وہ وزیر فینانس تھے پہلی مرتبہ جی ایس ٹی بل پارلیمنٹ میں متعارف کروایا تھا ۔شہ نشین پر اس تقریب میں سابق وزرائے اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ اور ایچ ڈی دیوے گوڑا کے علاوہ نائب صدر جناب حامد انصاری اور اسپیکر لوک سبھا سمترا مہاجن بھی موجود رہیں گے ۔ مسٹر ارون جیٹلی نے کہا کہ اس تقریب کیلئے تمام ارکان لوک سبھا و راجیہ سبھا کے علاوہ ریاستوں کے چیف منسٹروں ‘ وزرائے فینانس وغیرہ کو بھی مدعو کیا گیا ہے ۔

اس کے علاوہ جی ایس ٹی کونسل کے تمام موجودہ اور سابقہ صدور نشین اور ارکان کو بھی تقریب کیلئے مدعو کیا گیا ہے ۔ ریاستوں کے وزرائے فینانس کی بااختیار کمیٹی کو بھی مدعو کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جی ایس ٹی کے نتیجہ میں مرکزی اور ریاستی حکومتوں کے مالیہ میں اضافہ ہوگا اور ملک کی معیشت بھی بڑھے گی ۔ یہ سب کچھ طویل مدت میں ہوگا جبکہ فوری طور پر اس کے اثرات کے نتیجہ میں کچھ چیلنجس اور مشکلات کا سامنا بھی کرنا پڑسکتا ہے ۔ انہوں نے تاہم ان مشکلات اور پریشانیوں کی تفصیل بتانے سے گریز کیا ۔ صنعتی حلقوں کے اس ادعا پر کہ چھوٹی اور اوسط درجہ کی صنعتیس ابھی جی ایس ٹی پر عمل آوری کیلئے تیار نہیں ہیں مسٹر جیٹلی نے کہا کہ یکم جولائی سے جی ایس ٹی پر عمل آوری کا بہت پہلے اعلان کردیا گیا تھا تاکہ کسی کو بھی تیاری کے بغیر اچانک صورتحال کا سامنا کرنا نہ پڑے ۔ اس کے علاوہ ابتدائی وقتوں میں نتائج داخل کرنے کیلئے زیادہ وقت بھی دیا گیا ہے ۔ ایسے میں جو لوگ یا کمپنیاں ابھی تیار نہیں ہیں انہیں اس تبدیلی سے خود کو ہم آہنگ کرلینے کیلئے کافی وقت مل گیا ہے ۔ جی ایس ٹی میں نفع خوری کے خلاف موجود دفعہ کے تعلق سے سوال پر مسٹر جیٹلی نے کہا کہ اس دفعہ کو ایک مزاحم کے طور پر شامل کیا گیا ہے اور اسے اس وقت تک استعمال نہیں کیا جائیگا جب تک ایسا کرنے کیلئے مجبور نہ کردیا جائے ۔ حکومت کی جانب سے جی ایس ٹی پر عمل آوری کیلئے بڑے پیمانے پر تیاریاں شروع ہوگی ہیں۔ اب جی ایس ٹی پر عمل آوری کیلئے باضابطہ تقریب منعقد کرنے کا اعلا ن بھی کردیا گیا ہے حالانکہ ملک میں کچھ مقامات پر چھوٹے اداروں یا تاجروں کی جانبس ے جی ایس ٹی کے خلاف احتجاج بھی کیا جا رہا ہے لیکن یہ سب کچھ بے اثر ہوگیا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT