Sunday , April 22 2018
Home / شہر کی خبریں / ۔31 اکٹوبر تک 70 ہزار غریب لڑکیوں کی شادی کیلئے شادی مبارک اسکیم سے امداد

۔31 اکٹوبر تک 70 ہزار غریب لڑکیوں کی شادی کیلئے شادی مبارک اسکیم سے امداد

مزید 10 ہزار 395 درخواستیں التواء کا شکار ، محمد محمود علی کا اسمبلی میں جواب
حیدرآباد ۔ 8۔ نومبر (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے کہا کہ غریب لڑکیوں کی شادی کے موقع پر حکومت کی منفرد شادی مبارک اسکیم کے تحت 31 اکتوبر تک 70,053 خاندانوں کو امدادی رقم جاری کی گئی ہے۔ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران کے ودیا ساگر راؤ اور چنتا پربھاکر کے سوال پر ڈپٹی چیف منسٹر نے بتایا کہ حکومت نے اس اسکیم کے تحت یکم اپریل 2017 ء سے امدادی رقم کو 51,000 روپئے سے بڑھاکر 75,116 روپئے کردیا ہے۔ کلیان لکشمی اسکیم کیلئے بھی رقم میں اسی طرح اضافہ کیا گیا۔ انہوں نے شادی سے قبل امدادی رقم جاری کرنے سے متعلق ارکان کی تجویز پر مثبت ردعمل کا اظہار کیا اور کہا کہ اس بات کی کوشش کی جائے گی کہ رقم شادی سے قبل غریب خاندانوں کو جاری کردی جائے تاکہ انہیں شادی کے انتظامات میں مدد ملے۔ ارکان نے شکایت کی کہ 18 سال عمر کے باوجود لڑکی کا برتھ سرٹیفکٹ پیش کرنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے اور عہدیدار درخواستوں کو زیر التواء رکھے ہوئے ہے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ اگر لڑ کی کی عمر 18 سال ہوجائے اور ووٹر شناختی کارڈ ثبوت کے طور پر موجود ہو تو ایسی صورت میں درخواستوں کی قبولیت میں کوئی رکاوٹ نہیں ہوگی۔ عہدیداروں کو اس سلسلہ میں ہدایات جاری کی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر نے غریب مسلم خاندانوں کیلئے مذکورہ اسکیم کے آغاز کے ذریعہ اپنی اقلیت دوستی کا ثبوت دیا ہے۔ عوام اس اسکیم سے کافی خوش ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امدادی رقم میں اضافہ کے بعد ابھی تک 13,299 درخواستوں کی یکسوئی کرتے ہوئے رقم جاری کردی گئی۔ مزید 10,395 درخواستیں زیر التواء ہیں۔ انہوں نے درخواستوں کی جانچ اور منظوری کے عمل میں تیزی پیدا کرنے کا تیقن دیا۔ انہوں نے بتایا کہ 2014-15 ء میں 5779 درخواستوں کی یکسوئی کی گئی جبکہ 2015-16 ء میں 27,453 اور 2016-17 ء میں 23,522 درخواستوں کو منظوری دی گئی ۔ جاریہ سال 31 اکتوبر تک 13299 درخواستوں کو منظوری دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ اس اسکیم سے زیادہ سے زیادہ غریب خاندانوں کو فائدہ پہنچانا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ ٹی آر ایس کے رکن اسمبلی عامر شکیل نے کہا کہ شادی مبارک ایک منفرد اسکیم ہے جس کی مثال ملک کی کسی اور ریاست میں نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی دیگر ر یاستیں اس اسکیم کو اختیار کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔ انہوں نے شکایت کی کہ درخواستوں کی جانچ کا عمل ریونیو حکام کے حوالے کرنے سے منظوری میں کسی قدر تاخیر ہورہی ہے ۔ حالانکہ یہ اسکیم گرین چیانل کے تحت ہے، جس میں رقم کی اجرائی میں کوئی رکاوٹ نہیں۔ ٹی آر ایس کے رکن ودیا ساگر راؤ نے کہا کہ اس اسکیم کے تحت ان کے اسمبلی حلقہ میں کئی غریب خاندانوں کو فائدہ ہوا ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی نے ضلع واری سطح پر شادی مبارک کی تین برسوں میں منظورہ درخواستوں کی تفصیل بیان کی۔ حیدرآباد میں 23204 درخواست گزاروں کو امدادی رقم جاری کی گئی ہے جبکہ سب سے کم 90 منظوریاں ضلع جنگاؤں میں کی گئیں۔

TOPPOPULARRECENT