Saturday , June 23 2018
Home / Top Stories / ۔66 اردو آفیسرس کے تقررات کیلئے اندرون دو ہفتہ اعلامیہ کی اجرائی

۔66 اردو آفیسرس کے تقررات کیلئے اندرون دو ہفتہ اعلامیہ کی اجرائی

سرکاری سائن بورڈس پر اردو کی شمولیت کی ہدایت،اردو اساتذہ کے تقررات ،اقلیتی بہبود بجٹ میں اضافہ کا امکان، اے کے خاں کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 7 ۔مارچ (سیاست نیوز) حکومت کے مشیر برائے اقلیتی امور اے کے خاں نے کہا کہ محکمہ اقلیتی بہبود میں 66 اردو آفیسرس کے تقررات کے سلسلہ میں اندرون 2 ہفتے اعلامیہ جاری کردیا جائے گا ۔ امتحانات کے انعقاد اور تقررات کا عمل تین ماہ میں مکمل ہوگا ۔ اس طرح محکمہ اقلیتی بہبود کے ذریعہ چیف منسٹر ، وزراء ، ضلع کلکٹرس اور دیگر اہم دفاتر میں اردو آفیسرس مترجمین کی حیثیت سے خدمات انجام دیں گے۔ اے کے خاں نے آج میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے محکمہ اقلیتی بہبود سے متعلق مختلف امور پر حکومت کے موقف سے واقف کرایا۔ انہوں نے کہا کہ اردو میڈیم مدارس میں اساتذہ کے تقررات اور انفراسٹرکچر کی فراہمی کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ اردو بحیثیت دوسری سرکاری زبان پر عمل آوری کے لئے پہلے مرحلہ میں تمام سرکاری سائن بورڈس پر اردو کی شمولیت کی ہدایت دی گئی ہے۔ انہوں نے وقف بورڈ کی کارکردگی بہتر بنانے چیف منسٹر کی دلچسپی اور جائیدادوں کے تحفظ کی مساعی سے واقف کرایا۔ سکریٹری ڈائرکٹر اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور کے ہمراہ اے کے خاں نے کہا کہ اردو آفیسرس کے تقررات کے سلسلہ میں اردو اکیڈیمی کو نوڈل ایجنسی کا موقف دیا گیا ہے۔ جواہرلال نہرو ٹکنالوجیکل یونیورسٹی کے اشتراک سے امتحانات کا انعقاد عمل میں آئے گا۔ 6 اردو آفیسرس گریڈ I اور 60 آفیسرس گریڈ II رتبہ کے ہوں گے ۔ نوٹیفکیشن میں امیدواروں کیلئے درکار اہلیت اور تنخواہ کی تفصیلات شامل کی جائیں گی۔ اردو آفیسرس تین زبانوں اردو ، انگلش اور تلگو میں ماہر ہوں گے۔ اے کے خاں نے 6 اردو میڈیم اقامتی اسکولوں اور دو جونیئر کالجس کو انگلش میڈیم میں تبدیل کرنے سے متعلق خبروں کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ 2008 ء میں ان اسکولوں اور کالجس کو انگلش میڈیم میں تبدیل کردیا گیا اور اقامتی اسکول سوسائٹی کے تحت ان اداروں کی شمولیت کے وقت پہلے ہی سے یہ انگلش میڈیم تھے۔ انہوں نے کہا کہ اقامتی اسکول سوسائٹی چونکہ انگلش میڈیم کے ادارے چلاتی ہے ، لہذا اسے 6 اقامتی اسکولس اور دو جونیئر کالجس حوالے کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ تعلیم کے تحت موجود 2000 سے زائد اردو میڈیم اسکولس اور کالجس میں اساتذہ کے تقررات اور بہتر انفراسٹرکچر کی فراہمی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ اساتذہ کے تقررات کا عمل شروع کیا گیا ہے۔ اردو میڈیم میں ڈی ایس سی کا انعقاد عمل میں آئے گا ۔ اردو میڈیم اساتذہ میں محفوظ زمروں کے تحت امیدواروں کی عدم دستیابی کی صورت میں ان عہدوں کو عام زمرے میں منتقل کردیا جائے گا۔ اساتذہ کے تقررات تک ودیا والینٹرس کے ذریعہ خدمات حاصل کی گئی ہے ۔ سرکاری اداروں کے سائن بورڈس پر اردو کی شمولیت کے سلسلہ میں جی اے ڈی اور سرکاری زبان کمیشن کو ہدایات دی گئی ہے۔ اے کے خاں نے بتایا کہ اردو میڈیم اسکولوں میں ایس ایس سی طلبہ کیلئے سائنس میں مہارت پیدا کرنے کیلئے ڈیجیٹل کلاس رومس کے آغاز کی تجویز ہے۔ اردو اکیڈیمی کے ذریعہ ماہر لکچررس کا تعاون حاصل کرتے ہوئے تجرباتی طور پر لکچرس تیار کئے جائیں گے۔ تجربہ کی کامیابی کی صورت میں ان کلاس رومس کو اردو میڈیم اسکولس میں توسیع دی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اردو میڈیم طلبہ کی سہولت کیلئے مسابقتی امتحانات کے اردو میں انعقاد کا فیصلہ کیا ہے۔ ایمسٹ امتحان اردو میں منعقد ہوگا ۔ جبکہ ہر سال 100 اقلیتی طلبہ کو سیول سرویسز کی کوچنگ دی جائے گی ، اس کے لئے نامور خانگی کوچنگ سنٹرس سے معاہدہ کیا گیا ہے۔ کوچنگ کی فیس حکومت ادا کرے گی ۔ سیول سرویسز میں اردو میڈیم آپشن کے طلبہ کی سہولت کیلئے جامعہ ملیہ اور ہمدرد یونیورسٹی نصابی میٹریل حاصل کیا جائے گا ۔ اردو اکیڈیمی کو اس کی ذمہ داری دی گئی ہے ۔ مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی سے بھی تعاون حاصل کیا جائے گا ۔ اے کے خاں نے کہا کہ اردو اکیڈیمی کے ذریعہ تلگو سے اردو اور اردو سے تلگو میں ڈکشنری کی تیاری کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ یہ کام ماہرین کے ذریعہ جلد شروع کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ میں ایس سی ، ایس ٹی طبقات کو حاصل مراعات اقلیتوں کو دیئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس سلسلہ میں 19 مختلف اسکیمات کی نشاندہی کی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ ایس سی ، ایس ٹی کے مماثل مراعات کی فراہمی ملک میں پہلی مرتبہ تلنگانہ ریاست میں فراہم کی ہیں۔ اقلیتی بہبود بجٹ کا ذکر کرتے ہوئے اے کے خاں نے کہا کہ آئندہ مالیاتی سال بجٹ میں اضافہ کی سفارش کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جاریہ سال 70 فیصد بجٹ جاری ہوچکا ہے ۔ بجٹ کی اجرائی اور خرچ کے معاملہ میں اقلیتی بہبود دیگر محکمہ جات سے بہتر ہے۔ آئندہ دو تین دن میں محکمہ فینانس نے بعض اہم اسکیمات کیلئے بجٹ کی اجرائی سے اتفاق کیا ہے۔ اوور سیز اسکالرشپ اسکیم کے منتخب امیدواروں میں پہلی قسط کی رقم جاری کی جارہی ہے ۔ وقف بورڈ کی کارکردگی بہتر بنانے چیف منسٹر نے خصوصی دلچسپی لی ہے۔ ریونیو سروے میں اوقافی جائیدادوں کو شامل کرنے کیلئے تمام ضلع کلکٹرس کو 33,000 جائیدادوں کا ریکارڈ حوالے کیا گیا۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ بعض اوقافی جائیدادوں کا غلط استعمال ہورہا ہے۔ ڈپٹی کمشنر پولیس نے انہیں اطلاع دی کہ وقف بورڈ سے جاری کردہ جعلی این او سی کی تحقیقات میں پیشرفت ہوئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT