’اِسرائیل ، ہمارے مضبوط حلیفوں میں شامل ‘: امریکہ

واشنگٹن۔ 5 اگست (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے کہا کہ اسرائیل اس کے ’مضبوط ترین حلیفوں میں ایک‘ برقرار ہے اور اسکی تردید کی کہ یہودی مملکت کے ساتھ اس کے تعلقات میں خلیج پیدا ہوگئی ہے ۔ امریکہ نے کہا کہ ہمارے تعلقات کی نوعیت مضبوط اور ناقابل تبدیل ہے۔ ہم عہد واثق کرچکے ہیں کہ اسرائیل کے حق دفاع کی تائید کریں گے اور فوجی اقدامات کے اسرائیلی

واشنگٹن۔ 5 اگست (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے کہا کہ اسرائیل اس کے ’مضبوط ترین حلیفوں میں ایک‘ برقرار ہے اور اسکی تردید کی کہ یہودی مملکت کے ساتھ اس کے تعلقات میں خلیج پیدا ہوگئی ہے ۔ امریکہ نے کہا کہ ہمارے تعلقات کی نوعیت مضبوط اور ناقابل تبدیل ہے۔ ہم عہد واثق کرچکے ہیں کہ اسرائیل کے حق دفاع کی تائید کریں گے اور فوجی اقدامات کے اسرائیلی حق کا دفاع کریں گے، جن سے شہریوں کو محفوظ رکھتے ہوئے حریف کی جنگی صلاحیت کا تخمینہ کیا جاسکے۔ ایسا کرنا اسرائیل کی ذمہ داری ہے۔ وائٹ ہاؤز کے پریس سیکریٹری جوش اَرنیسٹ نے کہا کہ اسرائیلیوں اور فلسطینیوں کے علاوہ دیگر علاقائی فریقین کے ساتھ تعاون جاری رہے گا اور ہم کوشش کریں گے کہ دونوں فریقین کو مذاکرات کی میز پر لائیں تاکہ تشدد کا فوری خاتمہ ہوسکے۔

تشدد میں بے قصور فلسطینی شہری ہلاک ہوئے ہیں ۔ انہوں نے 72 گھنٹے کی جنگ بندی کی حمایت کی۔ وزارت خارجہ کی ترجمان جین ساکی نے حکومت ِ مصر اور فلسطین محمود عباس کی ستائش کی اور کہا کہ امریکہ بین اپنے الاقوامی شراکت داروں کے ساتھ تشدد کے خاتمہ کیلئے مشترکہ جدوجہد کرتا رہے گا۔ علاوہ ازیں پوشیدہ مسائل کی پائیدار یکسوئی کی کوشش کریگا تاکہ امن طویل مدتی بنیاد پر قائم ہوسکے۔ جین ساکی نے اقوام متحدہ کے اسکول پر اسرائیل کے فضائی حملے کی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ ہزاروں غزہ کے شہری بے گھر ہوچکے ہیں اور کئی ہلاک بھی ہوچکے ہیں۔ دریں اثناء صدر امریکہ براک اوباما نے آج ایک قانون پر دستخط کردیئے جس کے تحت اسرائیل کو 22 کروڑ 50 لاکھ امریکی ڈالر مالی امداد دی جائے گی تاکہ وہ آئرن ڈوم میزائل دفاعی نظام خرید سکے جس سے مختصر مسافتی راکٹ حملوں سے بچاؤ ہوگا۔

وائیٹ ہاؤز کے پریس سیکریٹری جوش اَرنیسٹ نے کہا کہ یہ رقم اس بات کو یقینی بنائے گی کہ اسرائیل پائیدار آئرن ڈوم کے اجزاء تیار کرسکے اور کافی ذخیرہ آئرن ڈوم مداخلت کاروں اور آلات کا کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ صدر اوباما کے دستخط کے بعد یہ مسودۂ قانون اب قانون بن چکا ہے اور امریکہ کو فخر ہے کہ آئرن ڈوم دفاعی نظام ، اسرائیل کے تعاون اور امریکی مالیہ سے تیار کیا گیا ہے، جس سے امریکی عوام کی زندگیوں کو تحفظ فراہم ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس اور ایوان نمائندگان نے گزشتہ ہفتہ قانون کی منظوری دی ہے۔ اسرائیل پر فضا سے راکٹوں سے اور سرنگوں سے خودکش بم برداروں کے ذریعہ حملے کئے جارہے ہیں۔ امریکہ نے عہد کیا ہے کہ وہ، اسرائیل کی مستحکم اور غیرمتزلزل تائید کرے گا۔ ایوان نمائندگان کے اسپیکر جان بیہنر نے کہا کہ ایوان نمائندگان اسرائیلیوں کے حق خودحفاظتی کی ہمیشہ تائید کرتا رہے گا۔

TOPPOPULARRECENT