Monday , January 22 2018
Home / ہندوستان / ’اہانت انگیز مضمون معاملہ ریاستی نہیں بلکہ قومی سطح کا معاملہ ہے‘ : سی پی آئی

’اہانت انگیز مضمون معاملہ ریاستی نہیں بلکہ قومی سطح کا معاملہ ہے‘ : سی پی آئی

کرشناگیری (تملناڈو) ۔ 5 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سی پی آئی نے آج مطالبہ کیا کہ وزیراعلیٰ تملناڈو جیہ للیتا کے خلاف سری لنکا کی ویب سائیٹ پر اپ لوڈ کیا گیا توہین آمیز مضمون کے تنازعہ کو قومی معاملہ قرار دیا جائے نہ کہ ایک ریاستی معاملہ۔ پارٹی کی ریاستی یونٹ کے سکریٹری ٹی پانڈین نے مضمون کی مذمت کرتے ہوئے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ مرکزی

کرشناگیری (تملناڈو) ۔ 5 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سی پی آئی نے آج مطالبہ کیا کہ وزیراعلیٰ تملناڈو جیہ للیتا کے خلاف سری لنکا کی ویب سائیٹ پر اپ لوڈ کیا گیا توہین آمیز مضمون کے تنازعہ کو قومی معاملہ قرار دیا جائے نہ کہ ایک ریاستی معاملہ۔ پارٹی کی ریاستی یونٹ کے سکریٹری ٹی پانڈین نے مضمون کی مذمت کرتے ہوئے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ مرکزی حکومت کو چاہئے کہ وہ اس معاملہ کو قومی سطح پر دیکھے نہ کہ اسے ریاستی مسئلہ سمجھ کر اس کے حال پر چھوڑ دیا جائے۔ یاد رہے کہ سری لنکائی وزارت دفاع کی ویب سائیٹ پر جیہ للیتا کے خلاف ایک توہین آمیز مضمون وزیراعظم نریندر مودی کے خاکہ کے ساتھ اپ لوڈ کیا گیا تھا جس سے ریاست تملناڈو میں کھبلی مچ گئی تھی

اور عوامی احتجاج نے شدت اختیار کرلی جس کے نتیجہ میں حکومت سری لنکا کو اس متنازعہ مضمون کو حذف کرنا پڑا تھا۔ دیگر معاملات پر حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے مسٹر پانڈین نے کہا کہ حکومت تملناڈو کو کانکنی کے شعبہ کو باقاعدہ بناتے ہوئے ریت مافیا کے خلاف کارروائی کرنی چاہئے۔ یہی نہیں بلکہ منادر، مساجد اور گرجاگھروں عمارتوں میں Tasmac نامی شراب کی دوکانات کے خلاف بھی کارروائی کرنی چاہئے۔ پانڈین نے مرکز کی بی جے پی حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے ملک میں اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ کا ذمہ دار قرار دیا جو ذخیرہ اندوزی کی وجہ سے بے تحاشہ اضافہ کی وجہ سے عام آدمی کی قوت خرید سے باہر ہوچکی ہیں۔ ذخیرہ اندوزی کے خلاف بھی کارروائی ہونی چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT