Saturday , September 22 2018
Home / Top Stories / ’خدارا ‘ پارلیمنٹ کے تقدس اور وقار کا احترام کریں ‘

’خدارا ‘ پارلیمنٹ کے تقدس اور وقار کا احترام کریں ‘

نئی دہلی 12 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک ایسے دن جبکہ پارلیمنٹ میں ایک کمرہ کے مسئلہ پر ترنمول کانگریس اور تلگودیشم کے ارکان کے مابین جھگڑے کی نوبت آگئی صدر جمہوریہ پرنب مکرجی نے آج ارکان پارلیمنٹ سے ایک جذباتی اپیل کی ہے کہ وہ ایوان کی وقار ‘ احترام اور تقدس برقرار رکھیں ۔ صدر جمہوریہ نے ارکان پارلیمنٹ کے نام اپنی اپیل میں کہا کہ ’ برا

نئی دہلی 12 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک ایسے دن جبکہ پارلیمنٹ میں ایک کمرہ کے مسئلہ پر ترنمول کانگریس اور تلگودیشم کے ارکان کے مابین جھگڑے کی نوبت آگئی صدر جمہوریہ پرنب مکرجی نے آج ارکان پارلیمنٹ سے ایک جذباتی اپیل کی ہے کہ وہ ایوان کی وقار ‘ احترام اور تقدس برقرار رکھیں ۔ صدر جمہوریہ نے ارکان پارلیمنٹ کے نام اپنی اپیل میں کہا کہ ’ برائے مہربانی ‘ خدا کیلئے آپ کے سوا کوئی بھی ایسا نہیں کرسکتا ۔ یہ ہماری ذمہ داری ہے ۔ ہم دونوں ایوانوں کے منتخبہ ارکان ہیں جن میں منتخب ارکان بھی ہیں ہمیں چاہئے کہ ہم ایوان کے وقار ‘ تقدس اور اس کے احتام کو برقرار رکھیں کیونکہ یہ ایک عظیم ادارہ ہے ۔ صدر جمہوریہ بہترین پارلیمنٹیرین ایوارڈ دینے کے بعد اظہار خیال کر رہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کا ادارہ جدوجہد آزادی کی علامت ہے اور یہ ہر رکن کی ذمہ داری ہے کہ اس ایوران کے وقار کو بحال رکھیں اور آپ تمام ( ارکان ) کو ایسا کرنا ہے ۔ پارلیمنٹ میں ترنمول کانگریس اور تلگودیشم پارٹی کے ارکان کے مابین پارلیمنٹ ہاوز میں کمرہ کے الاٹمنٹ کے مسئلہ پر تنازعہ پیدا ہوگیا تھا کیونکہ ہر جماعت چاہتی تھی کہ اسے وہی مخصوص کمرہ الاٹ کیا جائے ۔

تنازعہ کی اصل وجہ پہلی منزل پر کمرہ نمبر 5 ہے ۔ یہ کمرہ کئی برسوں سے تلگودیشم پارٹی کے زیر استعمال رہا ہے لیکن اس بار 6 اگسٹ کو یہ کمرہ ممتابنرجی کی قیادت والی ترنمول کانگریس کو الاٹ کردیا گیا تھا ۔ حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے پرنب مکرجی نے کہا کہ جب وزیر اعظم نریندر مودی نے پارلیمنٹ ہاوز کی سیڑھیوں کے سامنے اپنا سرجھکایا تو ان کے اس عمل سے وہ ( صدرجمہوریہ ) بہت متاثر ہوئے تھے ۔ ان کا ایسا کرنا جمہوریت کے اس ادارہ کے تئیں تقدس اور احترام کو ظاہر کرتا ہے ۔ نریندر مودی نے پارلیمانی انتخابات میں کامیابی کے بعد پارلیمنٹ ہاوز پہونچے تو انہوں نے وہاں سیڑھیوں کے سامنے سرجھکایا تھا ۔ صدر جمہوریہ نے کہا کہ وہ اب پارلیمنٹ کے رکن کی حیثیت سے اپنے ایام کی کمی محسوس کرتے ہیں کیونکہ انہیں بحیثیت صدر اب زیادہ اظہار خیال کا موقع نہیں ملتا ۔ صدر جمہوریہ نے ہندوستانی تاریخ کی یاد دہانی بھی کروایا اور یہ تذکرہ کیا کہ کس طرح ملک میں پارلیمانی نظام آیا اور پارلیمنٹ کس طرح قائم ہوئی ۔ ارون جیٹلی ‘ شرد یادو اور کرن سنگھ کو آج ایوارڈز سے نوازا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT