Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / ’چندرابابونائیڈو کواب بھگوان بھی نہیں بچاسکتا‘

’چندرابابونائیڈو کواب بھگوان بھی نہیں بچاسکتا‘

حیدرآباد۔8جون ( سیاست نیوز) سربراہ ٹی آر ایس و چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے کہاکہ حیدرآباد چندرا بابو نائیڈو کے باپ کی جاگیر نہیں ہے ۔ چیف منسٹر آندھراپردیش کا واویلا ’’ چور مچائے شور‘‘ کے مترادف ہے ۔ چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے ضلع گنٹور میں ریاست کے پہلے یوم تاسیس سے خطاب کرتے ہوئے ووٹ برائے نوٹ معاملے میں پھنسانے کا چیف منسٹر تلنگانہ پر الزامات عائد کرتے ہوئے اینٹ کا جواب پتھر سے دینے کا انتباہ دیا ۔ چیف منسٹر تلنگانہ نے نلگنڈہ میں منعقدہ ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اس کا جواب دیا اور کہا کہ چندرا بابو نائیڈو طفل مکتب ہیں جو پھنسانے پر پھنس جائیں گے ۔ پڑوسی ریاست کے چیف منسٹر نے تلنگانہ میں حکمران جماعت کے ایک رکن اسمبلی کو خریدنے کی کوشش کی ۔ ٹی آر ایس کے نامزد رکن اسمبلی اسٹیفن نے پیسوں کے ساتھ تلگودیشم کے رکن اسمبلی ریونت ریڈی کو اے سی بی کے ہاتھوں گرفتار کرا دیا ۔ تلگودیشم کارکن اسمبلی اب جیل میں ہے ۔ نائیڈو کی آواز کی ریکارڈنگ منظر عام پر آگئی ہے ۔ نائیڈو پکڑے جانے والے ہیں اب بھگوان بھی نہیں بچاسکتے ۔ شرمندگی کا اظہار کرنے کے بجائے چیف منسٹر آندھراپردیش ہم پر سامش کرنے کا الزام عائد کررہے ہیں ‘ کیا ہمارے پاس اور کوئی کام نہیں ہے ۔ نائیڈو دھمکیاں دیں گے تو کیا ہم ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھیں گے ۔ تقسیم آندھراپردیش کے وقت کانگریس قائدین کی خاموشی سے حیدرآباد کو 10سال تک دونوں ریاستوں کا مشترکہ صدر مقام بنایا گیا ہے ۔ حیدرآباد تلنگانہ کا حصہ ہے اور تلنگانہ حکومت کی حکمرانی ہے ۔ حیدرآباد میں آندھراپردیش کی اے سی بی ہوسکتی ہے مگر وہ نائیڈو کی طرح بدعنوان نہیں ہے ۔ ایم ایل سی انتخابات کیلئے تلگودیشم کے پاس درکار ووٹ ہی نہیں تھے ‘ دوسری جماعتوں سے ارکان اسمبلی کو خریدنے کیلئے تلگودیشم پارٹی نے اپنا امیدوار کھڑا کیا تھا ۔ حقائق کو قبول کرنے کے بجائے ایک چور خود چور چور کا شور مچا رہا ہے جس سے ہم ڈرنے گھبرانے والے نہیں ہیں اور نہ ہی تلنگانہ کے عوام اس کو برداشت کریں گے ۔ اصول پسندی کا ڈھول پیٹنے والے چندرابابو نائیڈو کی چوری کا ہم گلی سے دلی تک پردہ فاش کریں گے ۔ تلنگانہ پر چندرا بابو نائیڈو کا شوروغل کام نہیں آئے گا ۔

TOPPOPULARRECENT