Wednesday , June 20 2018
Home / ہندوستان / ’کشمیرچھوڑو‘ ریالی کے پیش نظر سرینگر میں سخت سیکوریٹی

’کشمیرچھوڑو‘ ریالی کے پیش نظر سرینگر میں سخت سیکوریٹی

سرینگر ۔ 23 جون (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر کے سرینگر میں حکام نے علحدگی پسندوں کی جانب سے منعقد کی جانے والی ’’کشمیر چھوڑو‘‘ ریالی کے پیش نظر پیدل راہروؤں اور ٹریفک کے بہاؤ کے لئے کچھ تحدیدات عائد کئے ہیں۔ سرینگر کے لال چوک میں نیم فوجی دستوں اور سی آر پی ایف کی بھاری تعداد تعینات کی گئی ہے تاکہ جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ا

سرینگر ۔ 23 جون (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر کے سرینگر میں حکام نے علحدگی پسندوں کی جانب سے منعقد کی جانے والی ’’کشمیر چھوڑو‘‘ ریالی کے پیش نظر پیدل راہروؤں اور ٹریفک کے بہاؤ کے لئے کچھ تحدیدات عائد کئے ہیں۔ سرینگر کے لال چوک میں نیم فوجی دستوں اور سی آر پی ایف کی بھاری تعداد تعینات کی گئی ہے تاکہ جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ایف) صدرنشین یٰسین ملک کو ریالی نکالنے سے روکا جاسکے۔ ملک نے اعلان کیا تھا کہ وہ پیر کے روز ’’کشمیر چھورو‘‘ تحریک کا آغاز کریں گے تاکہ کشمیر پر بین الاقوامی توجہ راغب کی جاسکے اور دستورہند کے آرٹیکل 370 سے توجہ ہٹائی جاسکے جس پر آج کل بہت زور دیا جارہا ہے۔ انہوں نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ آرٹیکل 370 پر مباحثہ ہونا چاہئے یا نہیں جس کے ذریعہ ریاست جموں و کشمیر کو خصوصی موقف عطا کیا گیا ہے۔ یہ شوشہ اس لئے چھوڑا گیا ہیکہ علحدگی پسندی سے توجہ ہٹا کر جموں و کشمیر کے موضوع پر مرکز و ریاست کی جانب مرکوز کی جائے۔ ریالی کی روک تھام کیلئے سیکوریٹی فورسیس نے جے کے ایل ایف کے کئی قائدین کو گرفتار کیا ہے لیکن یٰسین ملک اور ان کے دیگر اہم قائدین پہلے ہی روپوش ہوگئے ہیں۔ علاوہ ازیں پولیس نے مائسوما نامی علاقہ میں جو لال چوک سے قریب ہے، جے کے ایل ایف کے ہیڈکوارٹرس اور یٰسین ملک کی رہائش گاہ کو بھی مہربند کردیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT