Saturday , June 23 2018
Home / ہندوستان / ’’دم ہے تو مانجھی کی کھلی تائید کا اعلان کریں‘‘

’’دم ہے تو مانجھی کی کھلی تائید کا اعلان کریں‘‘

پٹنہ ۔ 16 ۔ فروری (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی پر یہ الزام عائد کرتے ہوئے کہ بہار میں افراتفری پھیلانے کیلئے چیف منسٹر جندام مانجھی کی خفیہ اعانت کر رہی ہے ۔ جنتا دل متحدہ کے سینئر لیڈر نتیش کمار نے زعفرانی پارٹی سے کہا کہ وہ مانجھی کی تائید میں کھل کر سامنے آئے۔ انہوں نے کہا کہ مانجھی کی خفیہ طریقہ سے اعانت کرنے کی بجائے بی جکے پی کو چاہئے

پٹنہ ۔ 16 ۔ فروری (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی پر یہ الزام عائد کرتے ہوئے کہ بہار میں افراتفری پھیلانے کیلئے چیف منسٹر جندام مانجھی کی خفیہ اعانت کر رہی ہے ۔ جنتا دل متحدہ کے سینئر لیڈر نتیش کمار نے زعفرانی پارٹی سے کہا کہ وہ مانجھی کی تائید میں کھل کر سامنے آئے۔ انہوں نے کہا کہ مانجھی کی خفیہ طریقہ سے اعانت کرنے کی بجائے بی جکے پی کو چاہئے کہ وہ کھل کر تائید کا اعلان کرے۔ جے ڈی یو مقننہ پارٹی کے نو منتخب لیڈر نے یہ الزام عائد کیا کہ بی جے پی کا یہ منصوبہ ہے کہ مانجھی کی زیر قیادت اقلیتی حکومت کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے بہار میں افراتفری اور سیاسی غیر یقینی کا ماحول پیدا کیا جائے ۔ انہوں نے یہ اندیشہ ظاہر کیا کہ 20 فروری کو تحریک اعتماد پر ووٹنگ کے دوران بی جے پی تشدد بھڑکانے کی کوشش کرے گی تاکہ ریاست میں صدر راج کے نفاذ سے راہ ہموار ہوسکے۔ انہوں نے بتایا اکہ مانجھی کے رویہ میں تبدیلی کیلئے دو تین ماہ کی مہلت دینے کے بعد انہیں ہٹادینے کا فیصلہ کیا گیا ۔ نتیش کمار نے یہ اعتراف کیا کہ خراب وقت اور حالات کا پھر ایک بار انہیں سامنا ہے لیکن اس کیلئے انہیں موردالزام نہیںٹھہرایا جاسکتا۔ انہوں نے ہندی میں کہا کہ دوش بھروسہ کرنے والے کا نہیں ہے بلکہ بھروسہ کے ساتھ وشواس گھات (اعتماد شکنی) کرنے والا کا ہے۔ جنتا دل یو لیڈر نے کہا کہ اس طرح کے حالات سے کئی مرتبہ دوچار ہوچکے ہیں اور میں جانتا ہوں مانجھی دغا بازی آخری نہیں ہے ۔ مستقبل میں بھی ایسے واقعات پیش آتے رہیں گے ۔ انہوں نے طنزیہ ریمارک کیا کہ لوگ پہلے دوستی کرتے ہیں پھر دشمنوں کی طرح حملہ کرتے ہیں اور اس طرح کے لوگوں کو برداشت کرنے کی مجھے بھی عادت ہوگئی ہے۔ نتیش کمار بظاہر ان لیڈروں کا حوالہ دے رہے تو جو کبھی ان کے بااعتماد رفیق تھے اور یہ ان کے حریف بن گئے ہیں، ان میں مرکزی وزیر رویندر کشوربا، سینئر بی جے پی لیڈر سوشیل کمار سوری اور جنتا دل متحدہ کے باغی رکن اسمبلی گیانندر سنگھ گیان شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے ان سے کوئی شکایت نہیں ہے ۔ میں اسے قسمت کا کھیل سمجھتا ہوں۔ انہوں نے بتایا کہ بی جے پی ان کے خلاف دلت کارڈ کا استعمال کر رہی ہے لیکن انہیں اس شعبدہ بازی کا کوئی سیاسی فائدہ نہیں ہوگا کیونکہ عوام ، ان کے عزائم سے بخوبی واقف ہیں۔ مسٹر نتیش کمار نے الزام عائد کیا کہ مانجھی کو اکثریت ثابت کرنے کیلئے 14 یوم کی مہلت دیکر گورنر کیسری ناتھ ترپاٹھی نے ریاست میں عدم استحکام کی صورتحال پیدا کردی اور مہلت کا بیجا استعمال کرتے ہوئے مانجھی نے شہرت پسند اسکیمات کا اعلان کردیا جسپر عمل آوری سے مالیاتی مسائل پیدا ہوجائیں گے اور سرکاری انتظامیہ مفلوج ہوجائے گا اور اس طرح کے صورت حال کیلئے بی جے پی اور مرکزی حکومت ذمہ دار ہے ۔ انہوں نے تحریک اعتماد پر خفیہ ووٹنگ کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ یہ مخالف دل بدل قانون کے مغائر ہوگا۔ انہوں نے اپنے حامی ارکان اسمبلی پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا اور کہا اکہ اگرچیکہ توڑ جوڑ کی کوشش ہورہی ہے لیکن کوئی ہم سے ٹوٹے گا نہیں۔ بعد ازاں نتیش کمار نے 130 ارکان اسمبلی کے تائید کا دعویٰ کرتے ہوئے ایک مکتوب راشٹریہ پتی اور ریاستی گورنر کو روانہ کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT