Monday , June 25 2018
Home / ہندوستان / ’’گجرات میں غریب کسانوں کی 45000 ایکر زمین صنعتکار کے حوالے ‘‘

’’گجرات میں غریب کسانوں کی 45000 ایکر زمین صنعتکار کے حوالے ‘‘

پہلے واجپائی اور اڈوانی کی پارٹنرشپ تھی ، آج مودی اور ادانی کی پارٹنرشپ ہے : راہول

پہلے واجپائی اور اڈوانی کی پارٹنرشپ تھی ، آج مودی اور ادانی کی پارٹنرشپ ہے : راہول

لاتور ۔ 14 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے بی جے پی وزارت عظمیٰ کے امیدوار نریندر مودی کو آج سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ نریندر مودی ترقی کے جس گجرات ماڈل کا پروپگنڈہ کررہے ہیں وہ محض ایک ٹافی ماڈل ہے جس سے گجرات کے صرف ایک صنعتکار کو فائدہ پہونچا ہے ۔ غریبوں اور کسانوں کے مفادات کو نظرانداز کردیا گیا ہے ۔ راہول نے کہا کہ بی جے پی اپنے انتخابی پوسٹرس پر خواتین کو بااختیار کرنے کا نعرہ دے رہے ہیں لیکن کرناٹک کے منگلور میں بی جے پی کارکنوں نے آر ایس ایس کارندوں کے ساتھ ایک پب میں گھس کر خواتین کو بری طرح زدوکوب کیا تھا ۔ گجرات کے چیف منسٹر نے ایک خاتون کا ٹیلیفون ٹیاپ کرنے کیلئے اپنے اختیارات اور پولیس مشنری کا استعمال کیا تھا۔ راہول گاندھی نے جو مہاراشٹرا کے لاتور میں کانگریس کی ایک انتخابی ریلی سے خطاب کررہے تھے کہا کہ ’’گجرات ماڈل کے بار میں مجھے آپ سے کچھ کہنے دیجئے … آپ نے سنا ہے کہ ( ایل کے ) اڈوانی اور جسونت سنگھ کو بی جے پی میں نظرانداز کیا جاچکا ہے ۔ اب ایک نیا نیتا ابھر آیا ہے ۔ وہ نریندر مودی ہے۔ پہلے اٹل بہاری واجپائی اور اڈوانی میں رفاقت و ساجھیداری تھی اب مودی اور ادانی کے درمیان ساجھیداری ہے ‘‘ ۔ مہاراشٹرا کے ضلع اورنگ آباد کے مساوی رقبہ 45,000 ایکر اراضی گجرات میں محض 300 کروڑ روپئے میں دیدی گئی ۔ یہ گجرات ماڈل نہیں ٹافی ماڈل ہے ۔ ایک روپیہ میں آپ کو ایک ٹافی ملتا ہے لیکن وہاں ( گجرات میں ) ایک اراضی ہے جو ایک روپیہ فی میٹر فروخت کردی گئی ۔ یہ زمین غریبوں اور کسانوں کی تھی ۔ گجرات میں نانو کار بنانے کیلئے 10,000کروڑ روپئے کا قرض دیا گیا جو اس ریاست میں صحت اور تعلیم پر خرچ کی جانے والی مجموعی رقم سے بھی زیاد ہے ۔ خواتین کو بااختیار بنانے بی جے پی مہم کے پوسٹرس کو نشانہ بناتے ہوئے راہول نے کہا کہ صرف بی جے پی کے زیراقتدار ایک ریاست چھتیس گڑھ میں ہی 20,000 خواتین لاپتہ ہیں۔

TOPPOPULARRECENT