Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / کمشنر سائبرآباد پر ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمودعلی کی برہمی

کمشنر سائبرآباد پر ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمودعلی کی برہمی

مساجد سے متعلق مکتوب سے دستبرداری کی ہدایت، مسلمانوں سے معذرت خواہی
حیدرآباد /15 ستمبر (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے شاستری پورم کی 17 مساجد سے متعلق کمشنر پولیس سائبر آباد کے مکتوب پر تاسف کا اظہار کرتے ہوئے سی وی آنند کو اپنے مکتوب سے دست بردار ہو جانے کی ہدایت دی۔ انھوں نے کہا کہ کمشنر پولیس سی وی آنند کمار کی جانب سے شاستری پورم کی مساجد کو غیر قانونی قرار دینے اور کمشنر گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن سومیش کمار کو تحریر کردہ مکتوب کے سبب مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے ہیں، جس کا انھیں بے حد افسوس ہے اور وہ مسلمانوں سے معذرت خواہی کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ وہ اس سلسلے میں ریاستی وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی اور ڈی جی پی انوراگ شرما سے بات چیت کرچکے ہیں، جب کہ سی وی آنند سے ٹیلیفون پر بات کرتے ہوئے ان سے وضاحت طلب کی اور مکتوب سے فوراً دست بردار ہونے کی ہدایت دی ہے، جس سے کمشنر پولیس سائبرآباد نے اتفاق کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ چین کے دورہ پر ہیں، حیدرآباد واپسی کے بعد وہ کمشنر پولیس کے خلاف شکایت کریں گے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ مذہبی معاملے میں مداخلت کا کسی کو اختیار نہیں ہے، جب کہ ٹی آر ایس حکومت سیکولر نظریات پر ایقان رکھتی ہے، جس میں سماج کے تمام طبقات کو اپنے مذہب پر عمل پیرا ہونے اور تبلیغ کی آزادی حاصل ہے۔ انھوں نے مسلمانوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ کمشنر پولیس کے مکتوب سے انھیں بھی تکلیف پہنچی ہے، مسلمان صبر و تحمل سے کام لیں، حکومت تمام مساجد کی حفاظت کرے گی۔ انھوں نے کہا کہ مسلمان روایتی جوش و خروش کے ساتھ مساجد میں اپنی عبادتوں کو جاری رکھیں اور بقرعید بے خوف ہوکر منائیں۔

TOPPOPULARRECENT