Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / 2015 کے پہلے 6ماہ میں 330فرقہ وارانہ فسادات

2015 کے پہلے 6ماہ میں 330فرقہ وارانہ فسادات

نئی دہلی۔2اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) ملک میں 2015 کے ابتدائی چھ ماہ میں گذشتہ اسی مدت کے دوران پیش آئے فرقہ وارانہ فسادات کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے ۔ رواں سال جنوری تا جون 330 فسادات ہوئے جن میں 51افراد اپنی زندگیوں سے محروم ہوگئے ۔ وزارت داخلہ کے اعداد کے مطابق جنوری تا جون 2015 کے دوران فرقہ وارانہ فسادات کے 330 واقعات پیش آئے ۔ اس کے مقابلے 2014 میں اس مدت کے دوران فرقہ وارانہ فسادات کے 252 واقعات پیش آئے تھے ۔رواں سال کے فرقہ وارانہ فسادات میں مجموعی طور پر 51افراد ہلاک اور دیگر 1,092 زخمی ہوگئے ۔ سماج وادی پارٹی کے زیر اقتدار ریاست اترپردیش میں سب سے زیادہ68واقعات پیش آئے ہیں جن میں 10افراد ہلاک اور 224 زخمی ہوئے ۔ یو پی میں گذشتہ سال فرقہ وارانہ فسادات کے 133 واقعات پیش آئے تھے جن میں 26 افراد ہلاک اور دیگر 374 زخمی ہوگئے تھے ۔جے ڈی( یو)  کے زیر اقتدار ریاست بہار میں رواں سال کے پہلے چھ ماہ میں فرقہ وارانہ فسادات کے 41واقعات پیش آئے جن میں 14 افراد ہلاک اور دیگر 169 زخمی ہوگئے جہاں سال 2014 اس مدت کے دوران فرقہ وارانہ فسادات کے 61واقعات میں پانچ افراد ہلاک اور دیگر 294 زخمی ہوئے تھے ۔ بی جے پی زیر اقتدار ریاست گجرات میں جنوری تا جون 2015ء فرقہ وارانہ فسادات کے 25 واعات پیش آئے جن میں سات افراد ہلاک اور دیگر 79 زخمی ہوگئے تھے ۔ اس کے مقابلے 2014 کے دوران فسادات کے 74واقعات  پیش آئے تھے جن میں 7 افراد  ہلاک اور دیگر 215 زخمی ہوئے تھے ۔ بی جے پی کے ہی زیر اقتدار ریاست مہاراشٹرا میں اس سال کے پہلے چھ ماہ کے دوران فرقہ وارانہ فسادات کے 59واقعات  میں چار افراد ہلاک اور دیگر 196 زخمی ہوگئے تھے ‘ جہاں گذشتہ سال اس مدت کے دوران 97فسادات میں 12افراد ہلاک اور دیگر 198 زخمی ہوئے تھے ۔کانگریس کے زیراقتدار کرناٹک میں اس سال جون تک 36فسادات ہوئے جن میں دو افراد ہلاک اور دیگر 123زخمی ہوئے ۔ جنوری تا جون 2014 کے دوران کرناٹک میں فرقہ وارانہ فسادات کے 73 واقعات پیش آئے تھے جن میں چھ افراد ہلاک اور دیگر 177افراد زخمی ہوئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT