’’2019 ء میں خواتین کی کثیرتعدادکا محرم کے بغیر حج ‘‘

حج کیلئے 1,36,000 آن لائن درخواستیں موصول ، خانگی ٹور آپریٹرس پالیسی کوآئندہ سال قطعیت ، مختار عباس نقوی کا خطاب

نئی دہلی ۔9 ڈسمبر۔( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر اقلیتی اُمور مختار عباس نقوی نے کہا ہے کہ مسلم خواتین کی کثیرتعداد آئندہ سال کسی محرم کے بغیر فریضۂ حج کیلئے روانہ ہوں گی ۔ مختار عباس نقوی نے جو اتوار کو یہاں منعقدہ اُمور حج سے متعلقہ تنظیموں کے نمائندوں سے اجلاس کی صدارت کررہے تھے 2019ء کے حج کیلئے حج کمیٹی آف انڈیا کو تاحال 2,23,000 درخواستیں موصول ہوئی ہیںجن میں 47 فیصد خواتین بھی شامل ہیں۔ حج درخواستوں کی وصولی کا عمل 7 نومبر 2018 ء سے شروع کیاگیا تھا اور 12 ڈسمبر اس کی آخری تاریخ ہے ۔ نقوی نے کہا کہ 2000 خواتین نے 2019 ء کے حج کیلئے کسی محرم کے بغیر سفر کی خواہش ظاہر کی اور توقع ہے کہ اس تعداد میں مزید اضافہ ہوگا۔ نقوی نے کہا کہ مرکز نے پہلی مرتبہ 2018 ء میں کسی محرم کے بغیر حج روانگی سے متعلق امتناع کو ختم کیا تھا جس کے نتیجہ میں 1300 خواتین محرم کے بغیر سفر حج پر روانہ ہوئی تھیں ۔ وزیر اقلیتی اُمور نے مزید کہا کہ ان خواتین کو قرعہ اندازی سے استثنیٰ دیا گیا ہے ۔ ہندوستانی خاتون عازمین کی اطاعت و رہنمائی کیلئے 100 سے زائد خاتون حج رابطہ کاروں اور خادم الحجاج تعینات کی جائیں گی ۔ انھوں نے کہاکہ آزادی ہند کے بعد 2018 ء میں پہلی مرتبہ سب سے زیادہ ایک لاکھ 75 ہزار عازمین نے فریضہ حج بیت اللہ ادا کیا اور کسی سبسیڈی کے بغیر اتنی کثیرتعداد نے حج کی سعادت حاص کی ہے ۔ حج کے عمل کو مکمل طورپر ڈیجیٹل بنائے جانے سے اس کو شفاف بنانے میں مدد ملی ہے ۔ 2019 ء کے حج کیلئے 1,36,00 آن لائین درخواستیں موصول ہوئی ہیں ۔ خانگی ٹور آپریٹرس ( پی ٹی اوز ) کے آن لائن پورٹلس پہلے ہی کارکرد بنائے جاچکے ہیں۔ پی ٹی اوز کی نئی پالیسی کو اس سال قطیعت دی جائیگی ۔ مختار عباس نقوی نے کہاکہ مرکزی حکومت سعودی عرب کے مختلف سرکاری اداروں اور جدہ میں ہندوستانی قونصل خانہ کے ربط و تعاون سے ہندوستانی عازمین کو بہتر سہولتیں فراہم کررہی ہے ۔ ہندوستان اور سعودی عرب کے مابین بہت جلد باہمی حج سمجھوتہ پر دستخط بھی متوقع ہے ۔

TOPPOPULARRECENT