Tuesday , November 13 2018
Home / شہر کی خبریں / 204 اقلیتی اقامتی اسکولوں میں داخلوں کا اعلامیہ جاری

204 اقلیتی اقامتی اسکولوں میں داخلوں کا اعلامیہ جاری

20 اپریل تک آن لائین درخواستوں کی سہولت، سکریٹری سوسائٹی بی شفیع اللہ کی پریس کانفرنس
حیدرآباد۔19مارچ(سیاست نیوز) تلنگانہ اقلیتی اقامتی اسکولو ںمیںتعلیمی سال 2018-19داخلوں کے لئے جناب بی شفیع اللہ سیکریٹری تلنگانہ میناریٹی ریسیڈینشل ایجوکیشنل انسٹیٹیوشنس سوسائٹی نے اعلامیہ جاری کردیا۔انہوں نے پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ 16ہزار طلبہ کو داخلہ فراہم کیا جائے گا جس میں 4000 سال گذشتہ کی مخلوعہ نشستیں ہیں جبکہ آئندہ تعلیمی سال کے لئے 12000نشستیں ہیں جن پر داخلہ فراہم کیا جائے گا اس کے علاوہ مابقی جماعتوں میں مخلوعہ نشستوں کے اعتبار سے داخلہ دیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ آن لائن رجسٹریشن کا 19مارچ سے 20اپریل 2018 تک جاری رہے گا۔جناب بی شفیع اللہ نے بتایا کہ جاریہ تعلیمی سال کے دوران 10 اقلیتی اقامتی جونیئر کالجس کے آغاز کا منصوبہ ہے اور اس سلسلہ میں حکومت کو تجویز روانہ کردی گئی ہے اگر حکومت کی جانب سے اس تجویز کو منظوری فراہم کرتے ہوئے اجازت حاصل ہوجاتی ہے تو ایسی صورت میں اقلیتی اقامتی جونیئر کالجس کے آغاز کی راہ ہموار ہوگی۔ انہوں نے بتایاکہ اضافی درخواستوں کی وصولی کی صورت میں 28اپریل 2018 کو قرعہ اندازی کی جائے گی۔ جناب بی شفیع اللہ نے مزید بتایاکہ داخلہ حاصل کرنے والوں کے اسناد کی جانچ 30 اپریل تا 5مئی کے دوران مکمل کرلئے جائیں گے اور یکم جون 2018 سے تعلیمی سال کا آغاز ہو جائے گا۔ انہو ںنے اردو میڈیم اسکولوں کو انگریزی میڈیم اسکولوں میں ضم کردیئے جانے کی اطلاعات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ اطلاعات بے بنیاد ہیں اوران میں کوئی سچائی نہیں ہے بلکہ حقیقت یہ ہے کہ جن اسکولوں کو محکمہ تعلیم کی جانب سے تبدیل کیا جاچکا تھا وہی اسکول تلنگانہ اقلیتی اقامتی اسکولوں میں ضم کئے گئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست میں جملہ 204 اقلیتی اقامتی اسکول چلائے جا رہے ہیں جن میں 107اسکول برائے طلباء ہیں جبکہ 97 اسکول برائے طالبات چلائے جا رہے ہیں۔ شہر حیدرآباد کے اعداد و شمار پیش کرتے ہوئے بتایا کہ حیدرآباد میں 40اقامتی اسکول چلائے جا رہے ہیں جن میں 21 برائے طلباء اور 19برائے طالبات شامل ہیں۔ انہو ںنے بتایا کہ5ویں تا 9ویں جماعت میں فراہم کئے جانے والے ان داخلوں کیلئے اولیائے طلبہ کو آن لائن داخلوں کے علاوہ اقامتی اسکولوں کے دفتر واقع بنجارہ ہلز اور حج ہاؤز پر بھی درخواستوں کے ادخال کی سہولت حاصل رہے گی اور می۔ سیوا کے ذریعہ بھی درخواستیں داخل کی جا سکتی ہیں۔ انہوںنے بتایاکہ ریاستی حکومت نے جاریہ سال بجٹ میں 735 کروڑ روپئے کا بجٹ اقلیتی اقامتی اسکولوں کے لئے مختص کیا ہے اور سوسائٹی کی جانب سے اسکول میں تعلیم حاصل کر رہے بچوں پر سالانہ فی کس 1لاکھ روپئے خرچ کئے جا رہے ہیں۔ جناب بی شفیع اللہ نے بتایاکہ آن لائن داخلوں کے لئے tmreis.telangana.gov.in پر رجسٹریشن کروایا جاسکتا ہے۔ انہو ںنے بتیا کہ اس کے علاوہ تفصیلات کے لئے ہیلپ لائن نمبر 040-23437909 پر رابطہ قائم کیا جاسکتا ہے۔ پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے بتایا مرکزی حکومت کی جانب سے 6اسکولوں کی تعمیر کیلئے گرانٹ منظورکی جا چکی ہے جس کے ذریعہ سوسائٹی اپنی عمارتوں کے تعمیری کام شروع کرے گی۔ اس کے علاوہ ریاستی حکومت کے محکمہ مال کی جانب سے تاحال 55مقامات پر جملہ 5ایکڑ اراضی کی نشاندہی کی گئی ہے اور یہ اراضیات سوسائٹی کے حوالہ کی جا چکی ہیں ان اراضیات پر اسکولی عمارتوں کی تعمیر کے سلسلہ میں جاریہ سال اقدامات کا جائزہ لیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT