Wednesday , June 20 2018
Home / شہر کی خبریں / 42میناریٹی ڈی ایڈ کالجس کی مسلمہ حیثیت ختم

42میناریٹی ڈی ایڈ کالجس کی مسلمہ حیثیت ختم

حیدرآباد۔/11فبروری ، ( سیاست نیوز) کمشنر و ڈائرکٹر اسکول ایجوکیشن ریاست تلنگانہ کے مطابق تلنگانہ میں 42کرسچین و مسلم میناریٹی انتظامیہ کے تحت چلائے جانے والے ڈی ایڈ کالجوں کو حکومت کی جانب سے مسلمہ حیثیت و منظوری نہیں دی گئی ہے۔ طلباء اگر ان 42 ڈی ایڈ کالجس میں داخلہ لینے کی صورت میں محکمہ تعلیمات یا حکومت ہرگز ذمہ دار نہیں رہیں گے۔ لہ

حیدرآباد۔/11فبروری ، ( سیاست نیوز) کمشنر و ڈائرکٹر اسکول ایجوکیشن ریاست تلنگانہ کے مطابق تلنگانہ میں 42کرسچین و مسلم میناریٹی انتظامیہ کے تحت چلائے جانے والے ڈی ایڈ کالجوں کو حکومت کی جانب سے مسلمہ حیثیت و منظوری نہیں دی گئی ہے۔ طلباء اگر ان 42 ڈی ایڈ کالجس میں داخلہ لینے کی صورت میں محکمہ تعلیمات یا حکومت ہرگز ذمہ دار نہیں رہیں گے۔ لہذا ڈی ایڈ کالجس میں داخلہ لینے کے خواہشمند طلباء سے 42ڈی ایڈ کالجوں میں داخلہ نہ لینے کی خواہش کی گئی ہے۔ محکمہ تعلیمات کے ذرائع نے مزید بتایا کہ سنگل ونڈو۔2اے سی کی جانب سے دیئے جانے والے محکمہ تعلیمات کیلئے قابل قبول نہیں رہیں گے۔ اس سلسلہ میں محکمہ تعلیمات کی جانب سے غیر مسلمہ و غیر منظورہ 42 ڈی ایڈ کالجوں کی فہرست جاری کی گئی ہے جن میں تلنگانہ کے تقریباً تمام اضلاع میں قائم کردہ ڈی ایڈ کالجس شامل ہیں بالخصوص شہر حیدرآباد میں واقع غیر منظورہ و غیر مسلمہ ڈی ایڈ کالجوں میں مغل کالج آف ایجوکیشن ( ڈی ایڈ ) بنڈلہ گوڑہ، اسلامیہ کالج آف ٹیچرس ایجوکیشن یاقوت پورہ، وی بی ای ایس ایلیمنٹری ٹیچرس ایجوکیشن عنبرپیٹ، پریسیڈنسی کالج آف ایجوکیشن ( ڈی ایڈ ) فارویمن فلک نما اور غلام احمد الیمنٹری ٹیچرس ایجوکیشن بنجارہ ہلز شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT