60 ہزار زائد دیہاتوں میں پینے کا پانی آلودہ

نئی دہلی ۔ 23 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) حکومت نے آج لوک سبھا میں بتایا ہیکہ 3.14 لاکھ دیہاتوں میں محفوظ پینے کے پانی کی سہولت نہیں ہے جس میں 66.000 سے زائد آبادیاں آلودہ پانی استعمال کرتی ہیں۔ دیہی علاقوں میں محفوظ پینے کے پانی کی سربراہی کیلئے مزید اقدامات کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے مرکزی وزیر بریندر سنگھ نے کہا کہ 3,14,529 دیہی آبادیوں میں یومیہ

نئی دہلی ۔ 23 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) حکومت نے آج لوک سبھا میں بتایا ہیکہ 3.14 لاکھ دیہاتوں میں محفوظ پینے کے پانی کی سہولت نہیں ہے جس میں 66.000 سے زائد آبادیاں آلودہ پانی استعمال کرتی ہیں۔ دیہی علاقوں میں محفوظ پینے کے پانی کی سربراہی کیلئے مزید اقدامات کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے مرکزی وزیر بریندر سنگھ نے کہا کہ 3,14,529 دیہی آبادیوں میں یومیہ فی کس 40 لیٹر سے بھی کم پانی سربراہ کیا جارہا ہے۔ جبکہ 66,093 دیہی آبادیوں میں آلودہ پانی استعمال کیا جاتا ہے۔ اس پانی میں ارسناک، فلورائیڈ، نائٹریٹ جیسی کیمیائی اجزاء شامل رہتے ہیں اور جن دیہاتوں میں پانی کی قلت پائی جاتی ہے ان کی زمرہ بندی کی جارہی ہے۔ تاہم انہوں نے بتایا کہ سال 2009-10 ء میں قومی دیہی آبرسانی پروگرام کی شروعات کے بعد محفوظ پینے کے پانی کی سہولت میں اضافہ ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT