Wednesday , November 22 2017

چین اور ملیشیا کی آندھرا کی راجدھانی کی تعمیر میں دلچسپی
عالمی معیار کا طریقہ کار اختیار کرنے عہدیداروں کو چیف منسٹر چندرا بابو نائیڈو کی ہدایت
حیدرآباد 9 اگسٹ ( پی ٹی آئی ) چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو نے آج کہا کہ دنیا کے کئی ممالک بشمول چین اور ملیشیا آندھرا پردیش ریاست کی نئی راجدھانی کی تعمیر میں حصہ لینا چاہتے ہیں۔ چیف منسٹر نے آج اپنی قیامگاہ پر سرمایہ مشاورتی گروپ کے اجلاس میں کہا کہ دنیا کے چند بڑے ممالک آندھرا پردیش کی سمت دیکھ رہے ہیں اور وہ نئی راجدھانی کی تعمیر اور ترقی میں حصہ دار بننا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جااپان نے نئے دارالحکومت کی تعمیر میں شراکت دار بننے کی خواہش ظاہر کی تھی اس کے بعد چین اور ملیشیا کی کئی بڑی کمپنیوں نے بھی اس میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے ۔ ایک سرکاری اعلامیہ میں چندرا بابو نائیڈو کا یہ کہتے ہوئے حوالہ دیا گیا کہ ریاست کے مجوزہ دارالحکومت امراوتی کو عوامی دارالحکومت بناتے ہوئے ایک عصری شہر بنانے کی ضرورت ہے اور یہ آندھرا پردیش اور ہندوستان کے عوام کیلئے فخر کی علامت ہوگا ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ دارالحکومت کی تعمیر کو شراکت داری کا نمونہ بنایا جانا چاہئے مسٹر نائیڈو نے اس کام کو کسی رکاوٹ سے پاک بنانے پر زور دیا اور کہا کہ ان کمپنیوں کو یہاں اپنی صنعتیں بنانے کیلئے بھی مواقع دئے جانے چاہئیں ۔ انہوں نے مشاورتی گروپ کے ارکان کو تجویز کیا کہ وہ سیڈ کیپیٹل ‘ دارالحکومت شہر اور دارالحکومت علاقہ کے ماسٹر پلانس کا تجزیہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ آندھرا پردیش کے دارالحکومت کو دوسرے ملکوں کیلئے ایک نمونہ بنانے کی ضرورت ہے ۔ چیف منسٹر نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ انرجی اسمارٹ گرڈ ‘ وسیع سڑک نیٹ ورک اور ڈرینس کی تعمیر میں عالمی معیار کا طریقہ کار اختیار کریں۔ انہوں نے عہدیداروں سے کہا کہ وہ ایک ایکشن پلان پر کام کریں جس کے نتیجہ میں مقامی وسائل کو موثر انداز میں استعمال کیا جاسکے اور شہر میں صفائی پر خاص توجہ دی جاسکے ۔ اپنے حالیہ دورہ استنبول ( ترکی ) کا تذکرہ کرتے ہوئے نائیڈو نے حکومت ترکی کی جانب سے استنبول شہر کو صرف سات سال کے عرصہ میں عالمی معیار کا شہر بنانے میں عصری ٹکنالوجی کے استعمال کی ستائش کی ۔ انہوں نے کہا کہ استنبول شہر دو کروڑ کی آبادی کے ساتھ دنیا میں تیزی سے ترقی پانے والا شہر بن کر ابھر رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے بھی انہیں قزاقستان اور ترکمانستان کے دارالحکومت شہروں آستانہ اور اشک آباد میں انفرا اسٹرکچر سہولتوں کے تعلق سے تفصیل سے واقف کروایا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT