Tuesday , November 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / ہند۔پاک سیریز کے امکانات ہنوز باقی: شہریار ہندوستان میں کھیلنے پر کھلاڑیوں کو تشویش : مصباح

ہند۔پاک سیریز کے امکانات ہنوز باقی: شہریار ہندوستان میں کھیلنے پر کھلاڑیوں کو تشویش : مصباح

کراچی۔ 22 اکٹوبر  (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی ) کے چیئر مین شہریار خان نے کہا ہے کہ ہندوستان کے ساتھ دسمبر میں ہونے والی دو طرفہ سیریز کے امکانات کم ضرور ہوئے ہیں لیکن ابھی تک دورازے مکمل طور پر بند نہیں ہوئے ہیں۔  ٹوئنٹی20  ورلڈ کپ میں پاکستانی کرکٹرز کی سیکیورٹی پر تشویش ہے۔آئی سی سی کے صدر ظہیر عباس بھی کہہ چکے ہیں کہ پاکستان کو ٹورنمنٹ میں حصہ نہیں لینا چاہئے۔ سیریز کے لئے مستقبل کے لئے دس دن اہم ہوں گے۔ اگر ہندوستان پاکستان سے سیریز کھیلنے سے انکار کرتا ہے تو اس وقت یہ فیصلہ کریں گے کہ پاکستان ہندوستان میں ہونے والے ورلڈ کپ میں حصہ لے گا یا نہیں ۔ شہریار خان نے  لاہور میں ہونے والی پریس کانفرنس میں محتاط انداز میں بات چیت کی لیکن منجھے ہوئے سفارت کار نے بعض مواقع پر بی سی آئی کے حکام تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ ایک دو دن میںہندوستان  اور آئی سی سی کو مکتوب لکھ رہا ہوں اور اس میں بتاوں کہ ہمارے ساتھ مہمانوں کے برعکس سلوک کیا گیا۔ہندوستان نے ہمیں مدعو ضرور کیا لیکن مہمان نوازی کے اصول پورے نہیں ہوئے۔یہ زیادتی کے مترادف ہے۔انہوں نے پر یس کانفرنس میں ششانک منوہر کی جانب سے بھیجا گیا دعوت نامہ بھی دکھایا۔ شہریار خان کے بموجب ہندوستان  سے سیریز کھیلنے کے لئے صرف جواب مانگنے گیا تھا جس پر ہندوستان  نے کہا کہ معاہدہ پچھلی حکومت کے دور میں ہوا تھا لہٰذا موجودہ حکومت سے اجازت لینی ہوگی جب کہ  بورڈ سے کہا کہ آپ اپنی حکومت کو ہمارے ساتھ کیا گیامعاہدہ دکھائیں۔

انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ یہ سمجھ رہے ہیں کہ میں خود ہی ہندوستان  پہنچ گیا لیکن ہندوستانی بورڈ نے مجھے تحریری طور پر دعوت نامہ بھیجا تھا اور ہمارے دورے کا سارا خرچہ بھی ہندوستان نے ہی اٹھایا۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ  بی سی سی آئی نے ملاقات کے لئے دوبارہ رابطہ نہیں کیا اور اپنے کئے پر معذرت بھی نہیں کی ۔دریں اثناء ہندوستان اور پاکستان کے درمیان سیریز کی ایک عرصہ سے وکالت کرتے آرہے پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان نے شہریار کے ناکام دورہ کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا ک ان کے ساتھی کھلاریوں کو ہندوستان میں کرکٹ کھیلنے پر تشویش لاحق ہے ‘ جیسا کہ 2016ء میںہندوستان ٹوئنٹی 20ورلڈ کپ کی میزبانی کررہا ہے

لیکن ممبئی میں جس طرح کے مظاہرے کئے گئے ہیں اُس کے بعدپاکستانی کھلاڑیوں نے تشویش کا اظہار کیاہے ۔ مصباح الحق نے مزیدکہاکہ یہ ہندوستان اور پاکستان کی کرکٹ کا ہی معاملہ نہیں بلکہ کہیں بھی کھیل کے متعلق اس طرح کے حالات نہیں ہونے چاہیئے کیونکہ کھیل اور سیاست کو الگ رکھا جانا چاہیئے ۔ مصباح الحق کے بموجب جس طرح آسٹریلیائی ٹیم نے بنگلہ دیشی دورہ کو ملتوی کردیا وہ بھی کھیل کیلئے مایو س کن ہے ۔ مصباح نے ورلڈ کپ میں پاکستانی کھلاڑیوں کی جانب سے شرکت کے معاملہ کو تشویش سے تعبیر کرتے ہوئے کہاکہ سیاسی کشیدگی کے بعد ہندوستان جاکر ورلڈ کپ کھیلنے ہمارے لئے تشویشناک ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب پاکستانی کھلاڑیوں یا حکام کے خلاف ایسے مظاہرے ہوں گے تو پھر وہاں کھیلنا ہمارے لئے مشکل ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT