Wednesday , September 19 2018

کٹھوا عصمت ریزی مقدمہ ، ڈی جی پی کا متاثرہ کے خاندان کو تیقن
وزراء کا استعفیٰ ،خاندان کی منتقلی ، عدالت نے میڈیا کی سرزنش ، گجر طبقہ کا احتجاج

سرینگر ۔ /13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے دو وزراء جو کٹھوا عصمت ریزی اور قتل کے مقدمہ کے ملزم کی تائید میں ایک جلوس میں شریک ہوکر طوفان کا مرکز بن گئے تھے ۔ آج پارٹی کے ریاستی صدر ست شرما کو اپنے استعفیٰ حوالے کرچکے ہیں جس کی توثیق ریاستی صدر بی جے پی نے بھی کی کہ وزیر جنگلات چودھری لال سنگھ اور وزیر صنعت چندر پرکاش نے جلوس میں شرکت کی تھی ۔ اپوزیشن نیشنل کانفرنس اور کانگریس ان کی برطرفی کا مطالبہ کررہی تھیں ۔ دریں اثناء ڈائرکٹر جنرل پولیس جموں و کشمیر ایس پی وید نے آج کہا کہ انہوں نے تمام ضروری اقدامات کرلئے ہیں تاکہ 8 سالہ عصمت ریزی کی متاثرہ لڑکی کے ارکان خاندان اور گواہوں کو مکمل تحفظ فراہم کریں گے ۔ یہ تیقن ملک گیر سطح پر لڑکی کی اجتماعی عصمت ریزی اور قتل کے خلاف برہمی کے نتیجہ میں منظر عام پر آیا تھا ۔ تاہم ڈی جی پی کے تیقن سے غیرمطمئین عصمت ریزی کی متاثرہ لڑکی کے ارکان خاندان بلند پہاڑی مقامات پر نقل مقام کرگئے تاکہ محفوظ رہ سکیں ۔ یہ خاندان بکروال طبقہ سے تعلق رکھتا تھا ۔ جموں سے موصولہ اطلاع کے بموجب دیگر طبقہ آج بطور احتجاج سڑکوںپر آگیا اور اس نے 8 سالہ لڑکی کی جموں و کشمیر کے علاقے کٹھوا میں اجتماعی عصمت ریزی اور قتل کے بھیانک واقعہ کے خلاف احتجاج شروع کردیا ۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب دہلی ہائیکورٹ نے ذرائع ابلاغ کی سرزنش کی ۔
کیونکہ اس نے متاثرہ لڑکی کے ارکان خاندان کی شناخت ظاہر کردی تھی ۔

 

TOPPOPULARRECENT