Sunday , September 23 2018
Home / شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

فرید سحرؔ قطعہ(طنز و مزاح) پہلے بیوی کا تو حق ادا کیجئے تین طلاق پر پھر کہا کیجئے خود ہی پھرتے ہو تنہا جہاں میں سحرؔ ساتھ بیوی کو اپنی رکھا کیجئے ……………………… غزل (طنز و مزاح) نیتا بڑا وہ کیسے بنا ہم سے پوچھئے کتنوں کا قتل اُس نے …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

محمد انیس فاروقی انیسؔ جنتا ترس رہی ہے …! موسم بغیر بارش جیسے برس رہی ہے بیوی بھی مجھ پہ یارو ویسے برس رہی ہے باتوں میں اُن کی میٹھی جنتا جو آگئی تھی وہ موج کررہے ہیں جنتا ترس رہی ہے ……………………… شاہدؔ عدیلی غزل …! پہلا سا جوش …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

محمد انیس فاروقی انیسؔ تحفظات…! بہت ہی خوبصورت جال چُن گئے ہو تم تحفظات کا ایک جال بُن گئے ہو تم چار مہینے بول کے چار سال نکال دیئے کس کی باڑوں میں یہ جال بُن گئے ہو تم ……………………… محمد شفیع مرزا انجمؔحیدرآبادی مزاحیہ غزل ان کی نوجوانی میں …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

عابی مکھنوی خودی کا راز…! خودی کے راز کو میں نے بروزِ عید پایا جی کہ جب میں نے کلیجی کو کلیجے سے لگایا جی جوحصہ گائے سے آیا اُسے تقسیم کر ڈالا جو بکرا میرے گھر میں تھا اُسے میں نے چُھپایا جی فریج میں برف کا خانہ نہ …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

انورؔ مسعود ہتک…! کل قصائی سے کہا اِک مفلسِ بیمار نے آدھ پاؤ گوشت دیجئے مجھ کو یخنی کے لئے گْھور کر دیکھا اُسے قصاب نے کچھ اس طرح جیسے اُس نے چھیچھڑے مانگے ہوں بلی کے لئے …………………………… عید سے پہلے …! ریٹ تیرے سن کے میں حیران ہو …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

محمد اظہر فاروقی (نظام آباد) غالب پیروڈی گھروں میں دوڑتے پھرنے کے ہم نہیں قائل جو آگ ہی میں نہ جُھلسے تو وہ بہو کیاہے بیٹی ہے رانی ، بہو کو نوکرانی کہتے ہو تمہی کہو کہ یہ اندازِ گفتگو کیا ہے یہ نوٹ بندی ، قطاروں میں ناچتی اموات …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

انورؔ مسعود شانہ بہ شانہ چھوڑ دینا چاہیے خلوت نشینی کا خیال وقت بدلا ہے تو ہم کو بھی بدلنا چاہیے یہ بھی کیا مَردوں کی صورت گھر میں ہی بیٹھے رہیں عورتوں کی طرح باہر بھی نکلنا چاہیے …………………………… امیرؔ نصرتی غزل نئی بیوی کو لانا چاہتا ہوں ’’مقدر …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

انورؔ مسعود کچھ کہاں سب ! اک غبارستان برپا کر گئی ہیں موٹریں گرد کی موجیں اُٹھیں اور ایک طوفاں ہوگئیں راہرو جتنے تھے سب آنکھوں سے اوجھل ہوگئے ’’خاک میں کیا صورتیں ہوں گی کہ پنہاں ہوگئیں‘‘ …………………………… محمد حسن الدین صوفیؔ قطعہ نیا چوزہ حماقت کررہا ہے بڑے …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

ڈاکٹر محمد ذبیح اللہ طلعتؔ سونے کا دام …!! ’’پٹرول کا ریٹ سنا تو لگا گویا سونے کا دام ہے حالانکہ خام تیل تو ہوا سستا اور عام ہے کوئی تو بتاؤ بڑھتی مہنگائی کا ظلم طلعتؔ لیڈر تو ہر ایک جیسے کہ بس بے لگام ہے ……………………… فرید سحرؔ …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

محمد امتیاز علی نصرتؔ فطرت…! حسد ہے ، بغض ہے ، رنجش ہے ، عداوت ہے زمانے والے کہتے ہیں یہی انسانی فطرت ہے حقیقت میں دوستو یہ سب زمانے کی عطائیں ہیں وگر نہ فطرتِ انساں تو محبت تھی ، محبت ہے ……………………… اقبال شانہ ؔ مزـاحیہ غزل بے …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

سلطان قمرالدین خسرو اب کہاں فرصت !! گھر بسانے کے لئے دو بول پڑھوانے گئے یوں سمجھ لو اپنی گردن آپ کٹوانے گئے اب کہاں فرصت نبھائیں دوستوں سے دوستی اک ذرا سی بات پر برسوں کے یارانے گئے ……………………… محمد انیس فاروقی انیسؔ نہیں معلوم …!؟ ہتھیلیوں میں جو …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

محمد انیس فاروقی انیسؔ نہیں معلوم …!؟ وقت بھی بدلتا ہے کیا تمہیں نہیں معلوم گرکے وہ سبھلتا ہے کیا تمہیں نہیں معلوم اقتدار کی کُرسی مستقل نہیں ہوتی وقت خود بھی ٹلتا ہے کیا تمہیں نہیں معلوم ……………………… شاہدؔ عدیلی مزاحیہ غزل میں جو مانگوں مجھے ملتا بہت ہے …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

فریدسحرؔ غزل(طنز و مزاح) ایسا کیوں ہوتا ہے اکثر یہ خیال آتا ہے ساس دیکھے جو بہو کو تو جلال آتا ہے آ کے سسرال میں کرتا ہے چکن کی خواہش خود کے گھر سے تو مگر کھا کے وہ دال آتا ہے چین سے بیٹھنے دیتی نہیں محفل میں …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

قطب الدین قطبؔ من کی بات…! جنتا کو اظہارِ خیالات کرنے دو عادت ہے ان کی سوالات کرنے دو میں نے رکھ لی ہے روئی کانوں میں مجھے بس اپنے من کی بات کرنے دو ……………………… ڈاکٹر خواجہ فریدالدین صادق ؔ مزاحیہ غزل مجھے دال روٹی سُنو وہ کھلاتیں مٹن …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

انورؔ مسعود دیدنی بہت نہیں ہے نئی طرزِ پیرہن سے گلہ مجھے تو اِس سے فقط ایک ہی شکایت ہے بٹن وہاں ہے ضرورت نہیں بٹن کی جہاں وہاں نہیں ہے جہاں پر بڑی ضرورت ہے …………………………… عینؔ افتخار تو کیا ؟ بڑھ رہی مہنگائی بے حساب تو کیا بن …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

پاپولر میرٹھی پہچان ! کبھی دروازے پہ دادی ، کبھی نانی آئی مجھ کو گھنٹی نہ سلیقے سے بجانی آئی اس کو بلوانا پڑا اس کی سہیلی سے مجھے کام جب آئی پہچان پرانی آئی ……………………… ٹپیکلؔ جگتیالی غزل (مزاحیہ ) دعوت میں بن بلائے گُھسا کیا بُرا کیا بے …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

قطب الدین قطبؔ ضیافت…! چاہتا ہوںکروں شرکت میں آپ کی ضیافت میں ڈرتا ہوں پڑ نہ جاؤں کہیں کسی آفت میں دستر تک پہنچ پانا گویا سر کرنا ہمالہ ہے بھگدڑ میں کچلا نہ جاؤں کہیں اپنی شرافت میں ……………………… شیخ احمد اظہرؔ سارے جہاں سے اچھا …! امن و …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

نظیر سہروردی مزاحیہ ہزل سر حضرت والا کا کیسا نظر آتا ہے کرسی پر صراحی کا پیندا نظر آتا ہے چھوٹی سی عمارت کاگنبد تو نہیں کوئی یا بہر وضو کوئی لوٹا نظر آتا ہے بے برگ و ثمر جیسے ہو شاخ شجر کوئی جس پر نہ کوئی پھول اور …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

ڈاکٹر قطب سرشار غزل آمد و رفت سانس کی ہے میاں کیا یہ مفہومِ زندگی ہے میاں ہر کسی کو کہاں میسر ہے میرے دل میں جو روشنی ہے میاں بجھ گئے ہیں دیئے صداقت کے کس کی آنکھوں میں روشنی ہے میاں تیرگی بس گئی ہے کمروں میں سارے …

Read More »

شیشہ و تیشہ

شیشہ و تیشہ

محمد شفیع مرزا انجم حیدرآبادی قطعہ اب کسی کی نوجوانی کا اجارہ چاہئے اس ضعیفی میں حسینوں کا سہارا چاہئے پیر لٹکے ہیں قبر میں اور ہے شادی کا شوق خوبصورت سولہ سالہ انکو بیوہ چاہئے ……………………… فرید سحر غزل ( مزاحیہ ) جب سے بیوی قطر گئی میری زندگی …

Read More »
TOPPOPULARRECENT