Wednesday , December 2 2020

جانوروں کی حفاظت کیلئے آسٹریلیا کے کنگارو جزیرے پر ڈیزاسٹر ٹیم

سڈنی، 13 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) آسٹریلیا کے جنگلوں میں لگی زبردست آگ کی وجہ سے 50 کروڑ سے زیادہ جانوروں کی موت کے درمیان جنوبی کنگارو جزیرہ پر جانوروں کو بچانے کے لئے آفت مشن شروع کرتے ہوئے پیر کے روز ایک ٹیم تعینات کی گئی۔جانور وں کی فلاح و بہبود کی تنظیم ہیومن سوسائٹی انٹرنیشنل (ایچ ایس آئی) کی جانب سے تشکیل دی گئی ڈیزاسٹر ٹیم آگ میں جھلسے ، دھوئیں سے متاثر اور بھیانک آتشزدگی سے متاثر جانوروں کی مدد کر رہی ہے ۔ ٹیم اس شدید قدرتی آفت سے بچ جانے والے جانوروں کے لئے پانی اور کھانے کا مرکز بنائے گی۔ایچ ایس آئی کی سینئر ماہر کیلی ڈونیتھان نے جنگلوں کی آگ سے جانوروں کی دردناک موت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ‘‘زمینی صورتحال انتہائی سنگین ہے ۔ جانوروں کو بچانے والے ایک اہلکار نے کہا کہ میں نے کئی بار مشکل حالات دیکھے ہیں۔ تاحد نظر جانوروں کی جھلسی ہوئی لاشیں نظر آرہی ہیں۔ ہم ہر روز بچاؤ اور تلاشی مہم چلا کر زندہ اور جھلسے ہوئے جانوروں کو تلاش کر رہے ہیں اور انہیں بچانے کی ہرممکن کوشش کررہے ہیں’’۔انہوں نے بتایا کہ ‘‘ہم نے آگ میں جھلسے کئی کنگارو اور کوالا کو پانی کے لئے ترستے ہوئے دیکھا ہے ۔ اتنی بڑی تعداد میں جانوروں کی موت کے بعد کسی بھی جانور کا زندہ ملنا معجزہ کی طرح لگتا ہے ’’۔کنگارو جزیرے پر تقریباً 50 ہزار کوالا تھے لیکن ماہرین کو خدشہ ہے کہ آگ کی وجہ سے آدھے سے زیادہ جزائر کے سوکھ جانے اور پودوں کے تباہ ہو جانے سے اب تقریباً 32 ہزار دیگر مویشیوں کے ساتھ 30 ہزار کوالا کی بھی موت ہو گئی ہے ۔واضح رہے کہ آسٹریلیا کے جنگلوں میں لگی آگ کو ملک کی تاریخ کی سب سے زبردست آگ مانا جا رہا ہے ۔ تقریباً 70 میٹر تک اٹھتے شعلے قطب مینار کی اونچائی کچھ ذرا کم ہیں۔ اس سے اب تک 50 کروڑ سے زیادہ جانوروں کی موت ہو چکی ہے اور 26 سے زائد افراد مارے جا چکے ہیں۔ آگ نے اتنی بڑی شکل اختیار کرلی ہے کہ اس کی زد میں آ کر سینکڑوں گھر بھی جل کر خاکستر ہو گئے ہیں جس کی وجہ سے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنا پڑ رہا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT