Wednesday , August 12 2020

صوبہ مدینہ میں بے ہودہ روانچی ووگیوعربیہ فوٹو شوٹ نے ہنگامہ کھڑا کردیا

یہ دنیا کا سب سے بڑا کھلا میوزیم ہے جو اردن کے پتراکے مقابلے میں تراشی ہوئی چٹانوں پر مشتمل ہے

دوبئی۔مقدس شہر المدینہ کے صوبائی علاقے ال ولا کے تاریخی مقام پردنیابھر کی سوپر ماڈلس کا ایک متنازعہ فوٹو شوٹ انجام دیاگیاہے۔

ایسا مانا جارہا ہے کہ سعودی عربیہ نے امریکی نژاد فیشن میگزین کے عرب ایڈیشن ووگیو عربیہ کے لئے اس بے ہودہ فوٹوشوٹ کی اجازت دی ہے۔

مذکورہ فوٹو شوٹ میں جس کو ”24اوورس ان ال ولا“ کا نام دیاگیاہے‘ مذکورہ نیویارک نژاد لیبل مونات نے کیٹ موس‘ ماریہ کارلا بوسوکون‘ کینڈسی سوانی پول جیسے کے کیٹ والک کا اہتمام کیا‘

جس میں سیاہ اور سفید نیم برہنہ کپڑے پہنائے گئے اور تاریخی مقام اور سعودی عربیہ کی تہذیب کے خلاف والک او رڈانس کرایاگیاہے۔

مذکورہ مہم کو منظم اور شوٹ کی ہدایت کاری لبنانی ڈئزانر علی مرزاہی نے کی ہے

View this post on Instagram

Bringing to life the first ever Mônot campaign was a collaborative creative effort. So I want to give a shout out to all of the amazing, incredibly talented people who brought my vision to life. Kate the Great, you showed me just what a ⭐️ you are. You trusted me and jumped blindly into this project. You gave it your heart and soul and you were the keystone to making this campaign a success. Alek, Amber, Candice, Jourdan, Mariacarla, and Xiao Wen you embody the inclusive cross-cultural swath of empowered women that Mônot wants to dress. Thank you for flying in from all over the world to be part of this passion project. Luigi & Iango the incredible images and film you created for this campaign have a timeless beauty that pulls you in and makes you think. I know how much hard work you put into this project, but when you look at the results they have an effortless grace to them. And Carine I just want to say thank you for everything! Your sleek, chic, and sexy aesthetic dovetail perfectly with that of the Mônot woman. You are not afraid to tell it like it is, even when I don’t want to hear it. You keep me honest and you keep me focused. They say, there is no “I” in team but let me tell you there is an “I” in this!!! So last but not least I want to thank myself for going against the expected. For the drive and passion that I dedicated to this project. What I was able to achieve with my first campaign, as the founder of an emerging independent brand, is pretty fanfreakingtastic. And above all, I want to thank myself for not giving up on my dreams. It’s moments like these, when everyone thinks I’m crazy, that I push even harder. I always welcome a challenge. As my father always said, “Follow your dreams and you will never lose sight of your goals”. Mônot Autumn Winter 2020-21 Campaign Creative director: @elimizrahi Photography: @luigiandiango @2bmanagement Fashion editor: @carineroitfeld Hair: @luigimurenu Makeup: @georgisandev Models: @msalekwek, @ambervalletta , @angelcandices, @jourdandunn @katemossagency, @mariacarlaboscono @jujujuxiaowen

A post shared by Eli Mizrahi (@elimizrahi) on

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ یہ نامناسب فوٹو شوٹ کی وجہہ سے تنازعہ اور مسلمانوں کے اندر برہمی کا سبب بنا رہا ہے۔ کئی مسلمان اس بات کو لے کر برہم ہیں کیوں سعودی انتظامیہ نے اس طرح کے شوٹ کی اجازت دی ہے۔

نارتھ ویسٹ مدینہ سے 300کیلومیٹر کے فاصلے پر ال ولا مقام ہے جس کو مدینہ صالح(شہر صالح) بھی کہتے ہیں‘ مملکت کا پہلا سائیڈ ہے جس کو یو این ای ایس سی او نے تسلیم کیاہے۔

یہ دنیا کا سب سے بڑا کھلا میوزیم ہے جو اردن کے پتراکے مقابلے میں تراشی ہوئی چٹانوں پر مشتمل ہے۔قرآن مجیدمیں مذکورہ مقام کے نام ”مدینہ صالح“ پیغمبر صالح علیہ سلام کے نام سے منسوب ہے۔

قرآن مجید میں صالح علہ سلام کے دورمیں ثمود قبیلہ کا واقعہ بیان کیاگیاہے۔ یہاں پر قوم ثمود رہتی تھی جو بت پرستی شکارتھی اورپہاڑوں میں گھر بناکر وہ لوگ رہتے تھے۔

قوم ثمود کی رہنمائی کے لئے اللہ تعالی نے صالح علیہ سلام کو ان کی طرف بھیجا تھا۔

قوم ثمود نے اپنے پیغمبر کے تعلیمات سے انکار کیا اور ان کے دئے گئے انتباہ کو نظر انداز کیا۔ قوم ثمود پر زلزلوں اور بجلیوں کا قہر اللہ تعالی کی طرف سے نازل ہوا تھا

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT