Thursday , August 22 2019

مودی ہی وزیراعظم یا غیربی جے پی لیڈر ؟

لوک سبھا الیکشن کے ووٹوں کی آج گنتی
پہلی مرتبہ پرچیوں سے تنقیح

نئی دہلی ۔ 22 مئی (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا انتخابات کیلئے ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی جمعرات 23 مئی کو صبح 7:00 بجے شروع ہوگی۔ ووٹوں کی گنتی کا عمل ہر حلقہ کے متعلقہ ریٹرننگ آفیسر کی موجودگی میں منعقد ہوگا۔ جیسے ہی ریٹرننگ آفیسر مطمئن ہوجائے کہ تمام ووٹوں کی گنتی درست طور پر ہوچکی ، اس حلقہ کے انتخابی نتیجہ کا اعلان کردیا جائے گا۔ پارلیمنٹ کے ایوان زیریں کے 543 کے منجملہ 542 حلقوں میں 17 اپریل تا 19 مئی سات مرحلوں میں منعقدہ انتخابات کی تکمیل کے بعد سے کس کی ہوگی جیت اور کون بنے گا وزیراعظم؟ جیسے اہم سوالوں کے جواب معلوم کرنے کیلئے سارے ملک کے عوام گذشتہ چار دن سے نتائج کا بے چینی سے انتظار کررہے ہیں۔ ان کے انتظار کی گھڑیاں بالآخر جمعرات کو ختم ہوجائیں گی جب ووٹوں کی گنتی ہوگی۔ 10 بجے دن تک ابتدائی رجحانات کا اعلان متوقع ہے۔ علاوہ ازیں جماعت واری موقف کے ساتھ نتائج کا رجحان بھی بڑی حد تک واضح ہوجائے گا۔ اہم امیدواروں میں جن کی انتخابی قسمت کا فیصلہ ہونے جارہا ہے، موجودہ وزیراعظم نریندر مودی ، صدر کانگریس راہول گاندھی، بی جے پی سربراہ امیت شاہ اور اترپردیش میں مہاگٹھ بندھن کے قائدین اکھیلیش یادو اور مایاوتی شامل ہیں۔ الیکشن کمیشن کے ایک عہدیدار نے کہا کہ 16 لاکھ پوسٹل بیالٹس کی گنتی کیلئے ہی کم سے کم دو گھنٹے لگ جائیں گے۔ لوک سبھا کے 543 کے منجملہ 542 حلقوں میں انتخابات منعقد ہوئے کیونکہ الیکشن کمیشن نے دولت کے بے تحاشہ استعمال کی بنیاد پر حلقہ ویلور کے چناؤ کو منسوخ کردیا تھا۔ ویلور کے انتخابات کے انعقاد کیلئے انتخابی ادارہ نے تاحال نئی تاریخ کا اعلان نہیں کیا ے۔

ضابطہ کے مطابق پہلے پیپرسلپس کی گنتی ہوگی جس کے بعد ان کے نتائج کی توثیق و یکسانیت ثابت کرنے کیلئے ای وی ایم نتائج دیکھے جائیں گے۔ ای وی ایم اور وی وی پیاٹ پرچیوں کے نتائج میں عدم یکسانیت کی صورت میں گنتی کئے گئے پیپرسلپس کے نتائج کو قطعی سمجھا جائے گا۔ ای وی ایم پیپر ٹرائیل مشین میچنگ کے سارے عمل کی تکمیل کیلئے اضافی چار تا پانچ گھنٹے درکار ہوں گے۔

TOPPOPULARRECENT