روحانی علاج کے بہانہ لڑکی کی عصمت ریزی

حیدرآباد۔/15 جون،( سیاست نیوز) روحانی علاج کے بہانے ایک خود ساختہ عامل نے لڑکی کی مبینہ طور پر عصمت ریزی کی۔ پولیس ایس آر نگر کے بموجب بورا بنڈہ کی ساکن 19 سالہ لڑکی جو اکثر بیمار رہتی تھی اور شادی میں رکاوٹ تھی جس کے سبب ملے پلی کے خود ساختہ عامل اعظم سے ربط پیدا کیا گیا۔ اعظم نے مبینہ طور پر علاج کے بہانے لڑکی اور اس کے والدین کو بیدر کی ایک درگاہ لے گیا اور وہاں پر اس نے لڑکی سے کہا کہ اگر وہ اس سے شادی نہ کرے تو وہ کالا جادوکرکے والدین کو ختم کردے گا۔ حیدرآباد واپس لوٹنے کے بعد 11 جون کو اعظم پھر ایک مرتبہ لڑکی کا علاج کرنے اور مکان کی بندش کرنے کے بہانے اس کے مکان گیا اور لڑکی کا جنسی استحصال کیا۔ متاثرہ لڑکی نے اپنے والدین کو اعظم کی اس حرکت سے آگاہ کیا جس کے نتیجہ میں پولیس ایس آر نگر نے خود ساختہ عامل بابا کے خلاف ایک مقدمہ درج کرتے ہوئے اس کی تلاش شروع کردی۔

TOPPOPULARRECENT