مہنگائی کے خلاف کانگریس کا چلو راج بھون احتجاج

   

قائدین کی گرفتاری، اندرا پارک اور اضلاع میں احتجاجی دھرنے
حیدرآباد ۔5 ۔اگست (سیاست نیوز) ملک میں بڑھتی مہنگائی اور جی ایس ٹی کے نفاذ کے خلاف کانگریس پارٹی نے آج ریاست گیر سطح پر احتجاجی مظاہروںکا اہتمام کیا ۔ حیدرآباد میں چلو راج بھون کے تحت احتجاج کرنے پر پولیس نے سینئر قائدین کو حراست میں لے لیا ۔ دھرنا چوک اندرا پارک پر پارٹی کی جانب سے احتجاج منظم کیا گیا جس میں سینئر قائدین نے شرکت کی اور مرکز سے پٹرول ، ڈیزل اور پکوان گیس کی قیمتوں میں کمی کے علاوہ اشیائے ضروریہ پر جی ایس ٹی سے دستبرداری کی مانگ کی ۔ آل انڈیا کانگریس کمیٹی نے ملک بھر میں چلو راج بھون احتجاج کی ہدایت دی تھی ۔ سی ایل پی لیڈر بھٹی وکرمارکا نے دھرنا چوک پر خطاب کرتے ہوئے مرکزی حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ مودی حکومت نے عوام پر مسلسل بوجھ عائد کیا ہے ۔ گزشتہ 8 برسوں میں عوام کو اضافی بوجھ کے ذریعہ معاشی مسائل میں مبتلا کردیا۔ انہوں نے کہاکہ ملک بھر میں مخالف آوازوں کو کچلنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ عوامی اداروں کو خانگیانے کے ذریعہ کارپوریٹ اداروں کے ہاتھوں فروخت کیا جارہا ہے۔ انہوں نے انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ کے ذریعہ سونیا گاندھی اور راہول گاندھی کو ہراساں کرنے کا الزام عائد کیا ۔ دھرنے کے بعد کانگریس قائدین راج بھون کے گھیراؤ کے لئے روانہ ہوئے لیکن پولیس نے انہیں راستہ میں روک لیا ۔ ورکنگ پریسیڈنٹ مہیش کمار گوڑ ، انجن کمار یادو ، انیل کمار یادو اور دیگر قائدین کو گرفتار کر کے نارائن گوڑہ پولیس اسٹیشن منتقل کردیا گیا۔ راج بھون کے اطراف پولیس کی بھاری جمیعت تعینات تھی ۔ دھرنے سے رکن اسمبلی سیتکا، اے آئی سی سی سکریٹری بوس راجو ، اے آئی سی سی سکریٹری انچارج تلنگانہ ندیم جاوید، پارٹی ترجمان بی نائک، نائب صدر ملو روی ، تادیبی کمیٹی کے صدرنشین ڈاکٹر چنا ریڈی ، ونود ریڈی اور دیگر نے خطاب کیا۔ ر