Wednesday , January 16 2019

جموں میں تارکین وطن اور روہنگیا مسلمانوں کیخلاف راشٹریہ بجرنگ دل کا احتجاج

جموں 13 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) دائیں بازو کے انتہا پسند گروپ راشٹریہ بجرنگ دل کے کارکنوں نے آج غیر قانونی روہنگیا اور بنگلہ دیشی تارکین وطن کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے گورنر جموں و کشمیر ستیہ پال ملک کو ایک ہفتے کی مہلت دی تاکہ وہ اس کے بارے میں کارروائی کی رپورٹ پیش کریں۔ احتجاجیوں میں سے چند ترشول، پلے کارڈس اور قومی پرچم لہرا رہے تھے۔ احتجاجی مظاہرین درّا ناروال کے ساتھ ایک مال کے باہر جمع ہوئے تھے جو روہنگیا مسلمانوں کے پناہ گزین کیمپ کے قریب ہے۔ وہ اپنے مطالبہ پر مبنی نعرے لگارہے تھے اور کہہ رہے تھے کہ غیرقانونی تارکین وطن کو خارج کیا جائے۔ بعدازاں احتجاجی مظاہرین پرامن طور پر منتشر ہوگئے۔ راشٹریہ بجرنگ دل کے ریاستی صدر راکیش بجرنگی نے کہاکہ احتجاجی مظاہرہ ایک انتباہ ہے جو گورنر زیرقیادت انتظامیہ کو دیا گیا ہے۔ اُنھوں نے دعویٰ کیاکہ روہنگیا اور بنگلہ دیشیوں کی موجودگی قومی صیانت کے لئے خطرہ ہے۔ بجرنگ دل نے گورنر کو ایک ہفتہ مہلت دی ہے تاکہ وہ روہنگیا اور بنگلہ دیشی پناہ گزینوں کی اپنے اپنے وطن کو واپسی یقینی بنائے۔ اُنھوں نے کہاکہ اگر حکومت اُن کے مطالبہ کی تکمیل سے قاصر رہی تو ایک زیادہ بڑا احتجاجی مظاہرہ کیا جائے گا جس میں مقامی شہری بھی حصہ لیں گے۔ اُنھوں نے دعویٰ کیاکہ یہ غیرقانونی تارکین وطن، غیر سماجی کارروائیوں جیسے منشیات کی فروخت میں ملوث ہیں اور اِس علاقہ کے تمدن کے لئے خطرہ بن گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT