Sunday , February 23 2020

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف سپریم کورٹ کا فیصلہ: مودی حکومت کے خلاف نوٹس جاری، 4 ہفتوں میں جواب داخل کرنے کی ہدایت، کئی عرضیوں پر سماعت کرنا باقی

نئی دہلی: شہریت ترمیمی قانون کے خلاف عرضیوں پرسماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے اندرون 4 ہفتوں میں جواب داخل کرنے کی ہدایت دی۔ دیگر کئی پٹیشنس پر عدالت عظمی نے کہا کہ ابھی کوئی حکم جاری کرنا ممکن، کیونکہ کئی عرضیوں پرسماعت باقی ہے۔ چیف جسٹس آف انڈیا ایس اے بوبڈے نے کہا کہ ہم ابھی کوئی بھی حکم جاری نہیں کرسکتے کیونکہ ابھی کئی عرضیوں کی سماعت باقی ہے۔

جسٹس بوبڈے نے کہا کہ تمام عرضیوں کو سماعت ضروری ہے اس لئے ابھی کوئی احکامات جاری نہیں کئے جاسکتے۔ واضح رہے کہ شہریت ترمیمی قانون کے خلاف 140 سے زائد عرضیاں داخل کی گئیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT