Sunday , January 19 2020

ممبئی: 16سالہ عاشق کے ساتھ مل کر 19سالہ لڑکی نے ایک شخص کا قتل کیا، نعش کے ٹکڑے بیاگ میں بھر کے ندی پھینک دیا

Photo: ANI

ممبئی: ماہم بیچ پر ایک سوٹ کیس میں انسانی اعضاء دستیاب ہونے کے بعد پولیس ٹیم نے تحقیقات کا آغاز کردیا ہے۔ ممبئی کرائم برانچ نے اس معاملہ میں نوجوان لڑکا و لڑکی کو گرفتار کرکے ان سے تحقیقات کا آغاز کردیا۔ عہدیداروں نے بتایا کہ متوفی شخص کی شناخت 59سالہ بنیت ریبیلو کی حیثیت سے کی ہے اور اس کو قتل کرنے والے ایک 19سالہ لڑکی اور اس کا 16سالہ عاشق ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق دو سال قبل مذکور ہ لڑکی اپنے والدین کا گھر چھوڑ کر بنیت کے گھر بطور خادم آکر رہنے لگی تھی۔ بنیت کو ا س لڑکی کے عشق کے بارے میں پتہ چل گیا اور وہ اس پر بہت غصہ تھا اور لڑکی کو جنسی ہراسانی کا شکار بنایا۔ جس کی وجہ سے لڑکی نے اپنے عاشق کے ساتھ مل کر اسے قتل کروادیا اور اس کی نعش کے ٹکڑے ٹکڑے کر کے ایک سوٹ کیس میں بند کردیا۔

ڈی سی پی شاہاجی اماپ نے بتایا کہ 26نومبر کو لڑکی نے اپنے عاشق کی مدد سے ایک لوہے کی سلاخ سے بنیت کے سر پر مارکر ہلاک کردیا۔ او راس کے تین دن بعد تک اس نعش کے ٹکڑے ٹکڑے کرتے رہے۔ اس کے بعد تین سوٹ کیسوں میں ان ٹکڑوں کو بھردیا۔ اس کے لڑکی اور اس کے عاشق نے ایک آٹو رکشا کے ذریعہ ا ن سوٹ کیسس کو میتھی ندی میں پھینک دیا۔ ان میں سے ایک بیاگ تیرتے تیرتے مخدوم شاہ بابا کی درگا کے پیچھے پہنچ گیا۔ جبکہ دیگر دو بیاگ کا پتہ نہیں چل سکا۔ عہدیدارو ں نے بتایا کہ لڑکی کے گھروالوں نے بتایا کہ لڑکی نے ان کا گھر دوسال قبل ہی چھوڑدیا کیونکہ انہیں اس کا رہن سہن پسند نہیں تھا۔اور بنیت کے گھر آکر رہنے لگی۔

جبکہ بنیت نے اپنے پڑوسیوں کو بتایا کہ اس نے لڑکی کو گود لیا ہے جبکہ اس تعلق کو ئی کاغذات برآمد نہیں ہوئے ہیں۔ بنیت اپنی بیوی کو طلاق دے چکا تھا اور وہ اپنے گھر میں رہا کرتا تھا۔ لڑکی کا تعلق گھٹکوپر سے ہے۔ لڑکی کا عاشق جو صرف 16سال بتایا گیا ہے اس نے صرف دسویں جماعت پا س کیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT