Friday , October 30 2020

معین آباد عصمت ریزی و قتل کیس پر وزیرداخلہ کا اعلیٰ سطح کا اجلاس

تحقیقات اے سی پی راجندر نگر کے تفویض، کسی بھید بھاؤکے بغیر کام کرنے محمد محمود علی کی ہدایت

حیدرآباد : ریاستی وزیرداخلہ محمد محمود علی نے سائبرآباد پولیس کمشنر وی سی سجنار کے علاوہ دوسرے پولیس عہدیداروں کو طلب کرتے ہوئے معین آباد میں پیش آئے کمسن مسلم لڑکی کی عصمت ریزی اور قتل کے واقعہ پر پولیس تحقیقات کی پیشرفت کا جائزہ لیا۔ خاطی کو سخت سے سخت سزا دلانے کے لئے قانون میں موجود تمام سہولتوں سے استفادہ کرنے کا مشورہ دیا۔ وزیرداخلہ نے سائبرآباد پولیس کمشنریٹ کے اعلیٰ پولیس عہدیداروں کو بتایا کہ چیف منسٹر کے سی آر اس مسئلہ پر بہت زیادہ برہم ہیں اور انھوں نے ہدایت دی کہ تمام زاویوں سے اس واقعہ کی تحقیقات کرتے ہوئے ملزم کے خلاف سخت سے سخت قانونی کارروائی کی جائے۔ محمد محمود علی نے بتایا کہ معین آباد میں پیش آئے اس وحشیانہ واقعہ کا ہم سب کو افسوس ہے۔ ہم اس طرح کے واقعات کی سختی سے مذمت کرتے ہیں۔ اجلاس میں جائزہ لینے کے بعد اس کیس کی تحقیقات کی ذمہ داری اے سی پی راجندر نگر اشوک چکرورتی کے حوالے کی گئی اور انھیں تاکید کی گئی ہے کہ کیس کی تہہ تک پہونچتے ہوئے چارج شیٹ تیار کی جائے۔ وزیرداخلہ نے کہاکہ ملزم مدھو سدن پر پی ڈی ایکٹ بھی لگایا گیا ہے۔ انھوں نے کہاکہ تلنگانہ حکومت میں کسی بھی ملزم کی پشت پناہی نہیں کی جاتی اور نہ ہی کوئی بھید بھاؤ کیا جاتا ہے۔ معین آباد میں ایک مسلم بہن کے ساتھ جو دردناک واقعہ پیش آیا ہے وہ قابل مذمت ہے اور ناقابل فراموش ہے۔ وزیرداخلہ نے کہاکہ تلنگانہ میں کسی بھی مذہب کی لڑکی کے ساتھ اس طرح کے واقعہ کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا اور ملزم کو فاسٹ ٹریک کورٹ کے تحت جلد از جلد سزا کا مستحق قرار دیا جائے گا۔ محمد محمود علی نے کہاکہ ہم نے ایک غریب اور معصوم بہن کو کھویا ہے۔ جس کا ہمیں غم ہے۔ تلنگانہ حکومت اپنے سیکولرازم کے لئے شہرت رکھتی ہے۔ ساتھ ہی تمام لوگوں کے ساتھ عدل و انصاف برقرار رکھا جائے گا۔ کسی کے ساتھ کوئی امتیاز نہیں برتا جائے گا۔ وزیرداخلہ نے عوام سے درخواست کی ہے کہ وہ سوشل میڈیا کے ذریعہ پھیلائے جارہے غلط بیانوں پر توجہ نہ دیں کیوں کہ اس میں بد زبانی اور بداخلاقی کا مظاہرہ کیا جارہا ہے۔ ایسی زبان استعمال کی جارہی ہے جس کو عزت دار طبقہ کبھی قبول نہیں کرتا۔ وزیرداخلہ نے کہاکہ کسی پر تنقید کرتے وقت اپنی زبان پر قابو رکھنا نہایت ہی اہم ہوتا ہے۔ تنقید برائے تعمیر ہونی چاہئے۔ کچھ لوگ اپنے آپ کو مسلمان کہتے ہوئے ایسی زبان کا استعمال کررہے ہیں جس سے پوری مسلم برادری شرمسار ہورہی ہے۔ وزیرداخلہ نے عوام کو بھروسہ دلایا کہ ملزم کو سخت سے سخت سزا دلائی جائے گی۔ تلنگانہ حکومت اس کیس کو پوری دیانتداری کے ساتھ تکمیل کرے گی اور ملزم کو اس کے کیفر کردار تک پہنچائے گی۔ اس جائزہ اجلاس میں کمشنر پولیس سائبرآباد وی سی سجنار، ڈپٹی کمشنر پولیس پرکاش ریڈی، اسسٹنٹ کمشنر اشوک چکرورتی بھی موجود تھے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT