Wednesday , September 20 2017
Home / ادبی ڈائری

ادبی ڈائری

پائیدار ترقی ۔ سماج کو کچھ نہ کچھ دیجئے

پائیدار ترقی ۔ سماج کو کچھ نہ کچھ دیجئے

شوکت مرزا کی تصنیف تبصرہ نگار : شجاعت علی آئی آئی ایس ‘ ریٹائرڈ اپنے علم و عمل سے نوجوان نسل کو متاثر کرنے والے بین الاقوامی دانشور ڈاکٹر شوکت مرزا نے اپنی مختصر لیکن جامع انگریزی تصنیف “Sustainable Development – give something back to the society” کے ذریعہ مدد …

Read More »

میرزایگانہ چنگیزی (آبروئے لکھنؤ خاک عظیم آبادہوں)

میرزایگانہ چنگیزی (آبروئے لکھنؤ خاک عظیم آبادہوں)

  سرورالہدیٰ شعبۂ اردو ، جامعہ ملیہ اسلامیہ ، نئی دہلی اردو کا ہر سنجیدہ طالب علم یگانہ کو ایک منفرد شاعر کی حیثیت سے جانتا ہے۔ اسے یہ بھی معلوم ہے کہ یگانہ کی شاعری اور شخصیت ادب کی دنیا میں بڑی متنازع رہی ہے۔ آج بھی ایسے ادیب …

Read More »

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ رضا وصفی ؔ

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ رضا وصفی ؔ

ڈاکٹر فاروق شکیل اجمالی تعارف : نام : سید رضا حسین، قلمی نام : رضا وصفیؔ، پیدائش : 1935 ء ، وفات : 11 اپریل 1996 ء ، کتابیں : ’’بوند بھر دریا‘‘ (2011 ء) مجموعہ کلام۔ رضا وصفیؔ حیدرآباد کے ان گنے چنے شعراء میں شمار ہوتے تھے جنہوں …

Read More »

کسی کا درد مل سکے تو لے اُدھار

کسی کا درد مل سکے تو لے اُدھار

  محمد عبدالمجیب ہماری امی صبر و شکر اور جذبۂ خدمتِ خلق کی اونچی مثال تھیں۔ بچپن کے بیشمار واقعات مجھے اچھی طرح یاد ہیں۔ محلے کی بڑی بوڑھی عورتیںامی کو دعائیں دیتی تھیں۔ ’’اللہ تیرا پیٹ ٹھنڈا رکھے،اللہ تجھے اچھا رکھے ، تیرے بال بچوں کا سکھ تجھے نصیب …

Read More »

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ وقاؔر خلیل اجمالی تعارف :

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ وقاؔر خلیل اجمالی تعارف :

ڈاکٹر فاروق شکیل نام : سید شاہ محمد خلیل الرحمن حسینی کوہ سوار، قلمی نام : وقاؔر خلیل، پیدائش :  29 اگست 1930 ء ، وفات : 2 نومبر 1998 ء ، تعلیم : میٹرک ، منشی ، منشی فاضل (ویسٹرن یونیورسٹی جالندھر) ، کتابیں : (1) محمد قلی قطب …

Read More »

مضامین چکبست

مضامین چکبست

سرورالہدیٰ جامعہ ملیہ اسلامیہ، نئی دہلی چکبست کو ایک شاعر اور نثر نگار کی حیثیت سے شہرت حاصل ہوئی۔ کبھی ان کی شاعری زیادہ موضوع گفتگو بنی تو کبھی ان کی نثر کا حوالہ زیادہ آیا۔چکبست کو بہت لمبی عمر نہیں ملی۔ صرف چوالیس سال کی عمر میں ان کا …

Read More »

ادبی سرقہ

ادبی سرقہ

آج کل ملک میں علمی اور ادبی سرقہ زوروں پر ہورہا ہے ۔ سارق مصنفین کی کوئی کمی نہیں۔ شاعر ، ادیب ، اسکالرس ، علم و ادب کی چوری کرنے میں کوئی عار محسوس نہیں کرتے اور دھڑلے سے اپنے نام سے منسوب کر کے شائع بھی کروالیتے ہیں …

Read More »

آہ ! مزاحیہ شاعری کے بادشاہ غوث محی الدین خواہ مخواہؔ

آہ ! مزاحیہ شاعری کے بادشاہ غوث محی الدین خواہ مخواہؔ

پروفیسر احمد عبدالحکیم، شکاگو ہیوسٹن ٹکساس (Texas) سے میرے ایک عزیز دوست جناب سید صلاح الدین سکندر نے مجھے فون پر اطلاع دی کہ خواہ مخواہ اب اس دنیا میں نہیں رہے۔ انا للہ و انا الیہ راجعون پڑھنے کے بعد میرے لبوں پر بے ساختہ یہ شعر موزوں ہوگیا …

Read More »

حضرت قاضی سید اعظم علی صوفی …فن اور شخصیت

حضرت قاضی سید اعظم علی صوفی …فن اور شخصیت

قاضی فاروق عارفی ہندوستان کے نقشہ میں حیدرآبا ددکن ایک ایساچمکتا ہوا شہر ہے جہاں پر اولیاء کرام ، علماء ذی احترام ،مشائخ عظام ودانشوران ملت و شعرائے کرام ہر دور میں رونق افروز ہوتے رہے ہیں ۔حیدرآباددکن ساری دنیا میں جس طرح چارمینار کی وجہ سے شہرت رکھتا ہے …

Read More »

’’زمیں کھاگئی آسماں کیسے کیسے‘‘ احمد علی شابؔ

’’زمیں کھاگئی آسماں کیسے کیسے‘‘ احمد علی شابؔ

ڈاکٹر فاروق شکیل اجمالی تعارف : نام : احمد علی، قلمی نام : احمد علی شابؔ ، پیدائش : 22 نومبر 1903 ء ، وفات : 20 اگست 1977 ء ، تعلیم : فارسی اور عربی کی تعلیم والد اور والدہ سے دسویں کامیاب ، کتابیں : (1 ’’تخیل شابؔ‘‘ …

Read More »

آصف سابع کی مذہبی رواداری

آصف سابع کی مذہبی رواداری

آرکائیوز کے ریکارڈ سے     ڈاکٹر سید داؤد اشرف آصف جاہی خاندان کی حکمرانی کا دور 1724 تا 1948ء سوا دو سو سال کا احاطہ کرتا ہے ۔ اس خاندان کے بانی نظام الملک آصف جاہ اول سے لے کر آخری حکمراں میر عثمان علی خان آصف سابع تک سب ہی …

Read More »

پروفیسر رفیعہ سلطانہ کا اُردو ادب میں مرتبہ

پروفیسر رفیعہ سلطانہ کا اُردو ادب میں مرتبہ

محمد خواجہ مخدوم محی الدین پی ۔ایچ۔ڈی ۔ ریسرچ اسکالر(اُردو) اورینٹل لینگویجس ‘ عثمانیہ یونیورسٹی ‘ حیدرآباد عثمانیہ یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ادباء شعراء ‘ قلم کاروں کی طویل فہرست میں کچھ چنندہ اساتذہ ادب ایسے گذرے ہیں جن کی ادبی خدمات کو فراموش نہیں کیا جاسکتا ۔بالخصوص یونیورسٹی کی …

Read More »

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘

ڈاکٹر فاروق شکیلؔ راگھویندر راؤ جذبؔ عالمپوری اجمالی تعارف : نام : راگھویندر راؤ ، قلمی نام : جذبؔ عالمپوری، پیدائش : 20 اپریل 1884 ء ، وفات : 28 ستمبر 1983 ء ، تعلیم : منشی فاضل، ادیب فاضل کے بعد جوڈیشل امتحان کامیاب کیا۔ راجہ رام نرسو سے …

Read More »

دہلی میںجشن ادب

دہلی میںجشن ادب

سرورالہدیٰ جامعہ ملیہ اسلامیہ، نئی دہلی دہلی کے ادبی جلسوں کا ایک اہم حوالہ اب جشن ادب بھی ہے۔ دہلی میں ادبی و ثقافتی پروگرام بعض اوقات اتنے زیادہ ہوتے ہیں کہ ہر پروگرام میں شریک ہونا مشکل ہوجاتا ہے۔ لیکن دہلی کی ادبی اور تہذیبی زندگی کے لیے ان …

Read More »

امجد حیدرآبادی کی تنقیدی بصیرت

امجد حیدرآبادی کی تنقیدی بصیرت

سید محبوب قادری امجدحیدرآبادی حیدرآباد دکن کے ان قد آور شخصیتوں میں سے ایک ہیں جنہیں ملک گیر شہرت ملی ۔ جن کے کار ناموں کوآج ہم طاق نسیان سے ڈھونڈ ڈھونڈ کرٹٹول ٹٹول کر لا شعور سے  شعور میں لارہے ہیں ۔ ان کے گراں قدر کام نے خداوند …

Read More »

’’ہرگز کبھی کسی سے عداوت نہیں مجھے‘‘

’’ہرگز کبھی کسی سے عداوت نہیں مجھے‘‘

حلیم بابرؔ دنیا میں جہاں جہاں اردو لکھنے اور پڑھنے والے زندہ ہیں اور خصوصیت کے ساتھ جہاں شاعر و اریب موجود ہیں وہاں ایک عظیم المرتبت عالمی شہرت یافتہ بزرگ استاد شاعر اردو و فارسی مرزا غالب کی شاعری کا وہ بے حد احترام کرتے ہیں اور خراجِ عقیدت …

Read More »

دکن میں اردو زبان و ادب کے

دکن میں اردو زبان و ادب کے

ایک بے لوث و دردمند خادم، ابن غوری ڈاکٹر مفتی محمد کامران عزیز اردو زبان تقریباً ایک درجن زبانوں کے مجموعے کا نام ہے جو زائداز سات صدیوں کے دوران مختلف مراحل اور ادوار سے گزر کر آج موجودہ شکل میں ہم تک پہنچی ہے ۔ ہر دور میں متعدد …

Read More »

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ حیرتؔ بدایونی

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ حیرتؔ بدایونی

ڈاکٹر فاروق شکیل اجمالی تعارف : اصل نام : سید حسن ، قلمی نام : حیرتؔ بدایونی ، پیدائش : 15 ربیع الاول 1894 ء ، وفات : 15 فروری 1975 ء ، تعلیم : گھر پر فارسی کی تعلیم ، مدرسہ شمس العلوم اورمدرسہ قادریہ (بدایوں) سے عربی نصاب …

Read More »

’’ہم اس کے ہیں ہمارا پوچھنا کیا‘‘

’’ہم اس کے ہیں ہمارا پوچھنا کیا‘‘

سرور الہدیٰ جامعہ ملیہ اسلامیہ۔ نئی دہلی ادب میں کیا کوئی کسی کا آدمی ہوسکتا ہے؟ اس سوال پر غور کرنے کی ضرورت اس لیے نہیں ہے کہ ادبی معاشرے نے یہ ثابت کردیا ہے کہ کوئی کسی کا ہوسکتا ہے۔یہ بھی کہا جاتا ہے کہ وہ فلاں صاحب کے …

Read More »

ہائی اُس زود پشیماں کا …

ہائی اُس زود پشیماں کا …

نسیمہ تراب الحسن ایک دفعہ میں اپنی بھابی کے ساتھ پرانے شہر سے بنجارہ آرہی تھی ۔ آٹو والا بیگم بازار کی طرف پلٹا تو میں نے کہا ادھر کدھر؟ کہنے لگا اس طرف ٹریفک بہت رہتی ہے ، دیکھئے میں آپ کو سکون سے لے جارہا ہوں۔ ٹریفک تو …

Read More »
TOPPOPULARRECENT