Sunday , March 26 2017
Home / ادبی ڈائری

ادبی ڈائری

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘

ڈاکٹر فاروق شکیلؔ راگھویندر راؤ جذبؔ عالمپوری اجمالی تعارف : نام : راگھویندر راؤ ، قلمی نام : جذبؔ عالمپوری، پیدائش : 20 اپریل 1884 ء ، وفات : 28 ستمبر 1983 ء ، تعلیم : منشی فاضل، ادیب فاضل کے بعد جوڈیشل امتحان کامیاب کیا۔ راجہ رام نرسو سے …

Read More »

دہلی میںجشن ادب

دہلی میںجشن ادب

سرورالہدیٰ جامعہ ملیہ اسلامیہ، نئی دہلی دہلی کے ادبی جلسوں کا ایک اہم حوالہ اب جشن ادب بھی ہے۔ دہلی میں ادبی و ثقافتی پروگرام بعض اوقات اتنے زیادہ ہوتے ہیں کہ ہر پروگرام میں شریک ہونا مشکل ہوجاتا ہے۔ لیکن دہلی کی ادبی اور تہذیبی زندگی کے لیے ان …

Read More »

امجد حیدرآبادی کی تنقیدی بصیرت

امجد حیدرآبادی کی تنقیدی بصیرت

سید محبوب قادری امجدحیدرآبادی حیدرآباد دکن کے ان قد آور شخصیتوں میں سے ایک ہیں جنہیں ملک گیر شہرت ملی ۔ جن کے کار ناموں کوآج ہم طاق نسیان سے ڈھونڈ ڈھونڈ کرٹٹول ٹٹول کر لا شعور سے  شعور میں لارہے ہیں ۔ ان کے گراں قدر کام نے خداوند …

Read More »

’’ہرگز کبھی کسی سے عداوت نہیں مجھے‘‘

’’ہرگز کبھی کسی سے عداوت نہیں مجھے‘‘

حلیم بابرؔ دنیا میں جہاں جہاں اردو لکھنے اور پڑھنے والے زندہ ہیں اور خصوصیت کے ساتھ جہاں شاعر و اریب موجود ہیں وہاں ایک عظیم المرتبت عالمی شہرت یافتہ بزرگ استاد شاعر اردو و فارسی مرزا غالب کی شاعری کا وہ بے حد احترام کرتے ہیں اور خراجِ عقیدت …

Read More »

دکن میں اردو زبان و ادب کے

دکن میں اردو زبان و ادب کے

ایک بے لوث و دردمند خادم، ابن غوری ڈاکٹر مفتی محمد کامران عزیز اردو زبان تقریباً ایک درجن زبانوں کے مجموعے کا نام ہے جو زائداز سات صدیوں کے دوران مختلف مراحل اور ادوار سے گزر کر آج موجودہ شکل میں ہم تک پہنچی ہے ۔ ہر دور میں متعدد …

Read More »

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ حیرتؔ بدایونی

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ حیرتؔ بدایونی

ڈاکٹر فاروق شکیل اجمالی تعارف : اصل نام : سید حسن ، قلمی نام : حیرتؔ بدایونی ، پیدائش : 15 ربیع الاول 1894 ء ، وفات : 15 فروری 1975 ء ، تعلیم : گھر پر فارسی کی تعلیم ، مدرسہ شمس العلوم اورمدرسہ قادریہ (بدایوں) سے عربی نصاب …

Read More »

’’ہم اس کے ہیں ہمارا پوچھنا کیا‘‘

’’ہم اس کے ہیں ہمارا پوچھنا کیا‘‘

سرور الہدیٰ جامعہ ملیہ اسلامیہ۔ نئی دہلی ادب میں کیا کوئی کسی کا آدمی ہوسکتا ہے؟ اس سوال پر غور کرنے کی ضرورت اس لیے نہیں ہے کہ ادبی معاشرے نے یہ ثابت کردیا ہے کہ کوئی کسی کا ہوسکتا ہے۔یہ بھی کہا جاتا ہے کہ وہ فلاں صاحب کے …

Read More »

ہائی اُس زود پشیماں کا …

ہائی اُس زود پشیماں کا …

نسیمہ تراب الحسن ایک دفعہ میں اپنی بھابی کے ساتھ پرانے شہر سے بنجارہ آرہی تھی ۔ آٹو والا بیگم بازار کی طرف پلٹا تو میں نے کہا ادھر کدھر؟ کہنے لگا اس طرف ٹریفک بہت رہتی ہے ، دیکھئے میں آپ کو سکون سے لے جارہا ہوں۔ ٹریفک تو …

Read More »

تعارف انجمن ریختہ گویان

تعارف انجمن ریختہ گویان

(یہ مضمون ’’انجمن ریختہ گویان‘‘ کی افتتاحی تقریب میں پڑھا گیا) سعید حسین ’’اللہ جمیل یحب الجمال‘‘  خدا خوبصورت ہے اور خوبصورتی کو پسند کرتا ہے۔ یہاں خوبصورتی کا مطلب دلوں کی خوبصورتی ہے، نیتوں کی خوبصورتی ہے ،ارادوں کی خوبصورتی ہے اور اسی خوبصورت ارادوں کے مقصد سے ’’آپ …

Read More »

مضامین ۔ رضیہ چاند (بڑھتا چاند)

مضامین ۔ رضیہ چاند (بڑھتا چاند)

نسیمہ تراب الحسن رضیہ چاند اُردو ادب کے گلشن کی ایک نوخیز کلی ہیں۔ ابھی کچھ ہی عرصہ ہوا ہے انھوں نے ’’محفل خواتین‘‘ میں آنا شروع کیا۔ پابندی کے ساتھ وقت مقررہ پر آنے والوں میں سرفہرست ہیں۔ ان کا تعلق درس و تدریس سے رہا ہے اس لئے …

Read More »

نواب میر عثمان علی خاں و عثمانیہ یونیورسٹی پر ایک نظر

نواب میر عثمان علی خاں و عثمانیہ یونیورسٹی پر ایک نظر

حلیم بابر سلطنت آصف جاہی اپنے اندر گونا گوں صفات رکھتی تھی ۔ جہاں انصاف و رواداری کے پھول کھلتے تھے جس کی مہکتی خوشبوؤں سے سارے عوام فیض یاب ہوتے تھے۔ طویل برسوں تک یہ حکومت قائم رہی اور یہ طویل مدت زائد از دو سو سال تک چلتی …

Read More »

ڈاکٹر فاروق شکیل

ڈاکٹر فاروق شکیل

’’زمیں کھا گئی آسماں کیسے کیسے‘‘ عبدالقیوم خاں باقی ؔ اجمالی تعارف : نام : عبدالقیوم خاں، تخلص : باقی، پیدائش : 30 ستمبر 1907 ء ، وفات : 1954 ء ، تعلیم : فارسی ادب سے ایم اے کی ڈگری عثمانیہ یونیورسٹی سے حاصل کی۔ 1942 ء میں عثمانیہ …

Read More »

’مرا جسم مجھ سے بغاوت پر آمادہ ہے‘ (شہریار کی یاد میں)

’مرا جسم مجھ سے بغاوت پر آمادہ ہے‘ (شہریار کی یاد میں)

سرورالہدیٰ شعبۂ اردو جامعہ ملیہ اسلامیہ،نئی دہلی شہر یارکو یاد کرتے ہوئے ان کی ایک نظم ’افتاد‘ یاد آتی ہے۔ دیکھتے دیکھتے چپ ہو گئے سب وہ بھی جو نیند کی شبنم میں نہا کر کسی نا دیدہ حسیں شکل کے دیدار کی لذت میں بھجن گاتے تھے وہ بھی …

Read More »

ظہیر الدین بابر

ظہیر الدین بابر

اولوالعزم اور فہیم و دانا حکمران جنہوں نے برصغیر پاک و ہند میں مغلیہ سلطنت کی بنیادڈالی دوسری اور آخری قسط سعید حسین چوتھی بار، بابر 930ھ (1524ء) میں لاہور پر حملہ آور ہوئے اور کھکروں کے خلاف کارروائی کی۔ بابر نے سرزمین ہند پر پانچویں اور فصیلہ کن حملہ …

Read More »

بزم علم و ادب شعبۂ خواتین کے باوقار علمبردار اردو ایوارڈس کی پیشکشی

بزم علم و ادب شعبۂ خواتین کے باوقار علمبردار اردو ایوارڈس کی پیشکشی

رفیعہ نوشین ادب زندگی کا ترجمان ہے اور حیدرآباد دکن ابتداء ہی سے ادب کا مرکز رہا ہے جہاں اہل قلم خواتین و حضرات ہر دور میں ادب کی آبیاری کرتے رہے ہیں۔ بالخصوص خواتین نے دکنی شاعری ہو یا افسانہ نگاری ، ناول نگاری ، طنز و مزاح ہو …

Read More »

قومی یکجہتی کے فروغ میں اردو زبان کا کردار

قومی یکجہتی کے فروغ میں اردو زبان کا کردار

ڈاکٹر محمد ناظم علی زبان اظہار خیال اور مواصلات کا بہترین اور عمدہ ذریعہ ہے ، یہ ایک سماجی ضرورت ہے ۔ زبان کی بنیاد پر ہی ہم حیوانی اور انسانی سماج میں امتیاز حاصل کرتے ہیں۔ انسان اشرف المخلوقات زبان کی بنیاد پر کہلاتا ہے ۔ زبان خود اور …

Read More »

دنیا کی قدیم یونیورسٹیز کا جائزہ

دنیا کی قدیم یونیورسٹیز کا جائزہ

حلیم بابر خوش نصیب ہیں وہ ممالک جہاں یونیورسٹیز کثیر تعداد میں موجود ہوں۔ دانشوران ملک کی نظروں میں یونیورسٹیز کی بڑی اہمیت ہے ۔ چونکہ ان کے ذریعہ دنیائے علم و سائنس میں اعلیٰ تعلیم حاصل کی جاسکتی ہے ۔ حصول علم کو ہر مذہب لازمی قرار دیتا ہے۔ …

Read More »

تنقید سے بے زاری

تنقید سے بے زاری

سرورالہدیٰ جامعہ ملیہ اسلامیہ، نئی دہلی تنقید سے بیزاری کے مختلف اسباب ہوسکتے ہیں۔ وہ لوگ جو تنقید کے مخالف ہیں اپنے بہترین لمحات میں گفتگو کرتے ہوئے نقاد کے فرائض انجام دیتے ہیں۔ جب ان سے یہ کہا جاتا ہے کہ آپ نے اپنی گفتگو میں ادب کے بنیادی …

Read More »

مخدوم … شخصیت اور شاعری

مخدوم … شخصیت اور شاعری

ڈاکٹر سید داؤد اشرف مخدوم کو اس دارِ فانی سے رخصت ہوئے تقریباً 47 سال ہورہے ہیں لیکن آج بھی یہ محسوس ہوتا ہے کہ بساط رقص پر ان کی جگہ خالی ہے ۔ سبکو اس گل تر کی تلاش ہے مگر وہ کہیں نہیں ملتی ، صرف یادوں کے …

Read More »

ظہیر الدین بابر

ظہیر الدین بابر

اولوالعزم اور فہیم و دانا حکمران جنہوں نے برصغیر پاک و ہند میں مغلیہ سلطنت کی بنیادڈالی سعید حسین آگرہ فتح کرنے کے بعد آگرہ کے قلعہ سے بہت بڑا خزانہ ملا تھا۔ اسی میں آٹھ متقال وزن کا وہ نہایت بیش قیمت الماس بھی شامل تھا جسے علاؤ الدین …

Read More »
TOPPOPULARRECENT