Wednesday , July 8 2020

گیارہویں جماعت کی 17سالہ طالب علم میں عصمت ریزی

شاہڈول۔پولیس کی جانکاری کے مطابق مدھیہ پردیش کے ایک گاؤں میں ایک 22سالہ شخص کے ہاتھوں مبینہ عصمت ریزی‘ گلے گھونٹ کر مرنے اور جھاڑیوں میں پھینکی گئی ایک 17سالہ لڑکی اسپتال میں ہلاک ہوگئی ہے۔

پولیس نے بتایاہے کہ ملزم کو گرفتار کرلیاگیاہے۔۔ سپریڈنٹ آف پولیس شاہڈول ستیندر شکلا نے کہاکہ ضلع کے جیٹ پور پولیس اسٹیشن کے تحت آنے والے ایک گاؤں میں یہ واقعہ پیش آیاہے۔

انہوں نے کہاکہ نابالغ لڑکی 11ویں جماعت کی طالب علم ہے‘ جو منگل کی رات قریب کے مندر میں پوجا کے لئے گئی تھی۔ مذکورہ ایس پی نے کہاکہ پریشان حال والدین نے تلاش شروع کی اور نابالغ کا پتہ چلانے میں ناکام رہے۔

نیم بیہوشی کے عالم میں لڑکی دستیاب ہوئی
انہوں نے کہاکہ ایک روز بعد چہارشنبہ کے روز لڑکی نیم بیہوشی کے عالم میں گھر کے پاس کے جھاڑیوں میں ملی تھی۔ مذکورہ ایس پی نے کہاکہ نابالغ کو فوری اس کے گھر والوں نے شاہڈول کے ضلع اسپتال لے گئے جہاں پر چہارشنبہ کی رات کو اس کی موت ہوگئی تھی۔

شکلا نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ اس کی عصمت ریزی کے بعد ملزم 22سالہ عارف خان نے اس کو مرنے کی منشاء سے گلا دباتھا جس کو گرفتار کرلیاگیاہے

ملزم نے جرم تسلیم کیا
مذکورہ ایس پی نے کہاکہ تفتیش کے دوران ملزم نے اپنا جرم قبول کرلیا ہے۔ شکلا کا کہنا ہے کہ مذکورہ شخص نے کہاکہ اس نے لڑکی کی عصمت ریزی کی اور گلہ دبا کر اس کو جھاڑیوں میں پھینک دیا اور سمجھا کہ وہ مر گئی ہے۔

ایس پی نے مزید کہاکہ لڑکے پرعصمت ریزی اور قتل میں ائی پی سی کی دفعات کے علاوہ پی او سی ایس او کے تحت مقدمات درج کئے گئے ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT